کسے خبر تھی کہ خود کو وہ یوں چھپائے گا

عابد خورشید

کسے خبر تھی کہ خود کو وہ یوں چھپائے گا

عابد خورشید

MORE BYعابد خورشید

    کسے خبر تھی کہ خود کو وہ یوں چھپائے گا

    اور اپنے نقش کو لہروں پہ چھوڑ جائے گا

    خموش رہنے کی عادت بھی مار دیتی ہے

    تمہیں یہ زہر تو اندر سے چاٹ جائے گا

    کچھ اور دیر ٹھہر جاؤ خواب زاروں میں

    وہ عکس ہی سہی لیکن نظر تو آئے گا

    بچا سکو تو بچا لو یہ آسماں یہ زمیں

    ذرا سی دیر میں یہ اشک پھیل جائے گا

    یہ اپنے دھیان میں رکھنا کہ میں نہ آیا تو

    طلوع صبح کی خاطر کسے بلائے گا

    بہت ہوا تو یہی ہوگا اے مرے خورشیدؔ

    وہ شخص جا کے کبھی لوٹ کر نہ آئے گا

    مآخذ:

    • کتاب : Pakistani Adab (Pg. 594)
    • Author : Dr. Rashid Amjad
    • مطبع : Pakistan Academy of Letters, Islambad, Pakistan (2009)
    • اشاعت : 2009

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY