کوئی بجلی ان خرابوں میں گھٹا روشن کرے

عرفان صدیقی

کوئی بجلی ان خرابوں میں گھٹا روشن کرے

عرفان صدیقی

MORE BY عرفان صدیقی

    کوئی بجلی ان خرابوں میں گھٹا روشن کرے

    اے اندھیری بستیو تم کو خدا روشن کرے

    ننھے ہونٹوں پر کھلیں معصوم لفظوں کے گلاب

    اور ماتھے پر کوئی حرف دعا روشن کرے

    زرد چہروں پر بھی چمکے سرخ جذبوں کی دھنک

    سانولے ہاتھوں کو بھی رنگ حنا روشن کرے

    ایک لڑکا شہر کی رونق میں سب کچھ بھول جائے

    ایک بڑھیا روز چوکھٹ پر دیا روشن کرے

    خیر اگر تم سے نہ جل پائیں وفاؤں کے چراغ

    تم بجھانا مت جو کوئی دوسرا روشن کرے

    آگ جلتی چھوڑ آئے ہو تو اب کیا فکر ہے

    جانے کتنے شہر یہ پاگل ہوا روشن کرے

    دل ہی فانوس ہوا دل ہی خس و خار ہوس

    دیکھنا یہ ہے کہ اس کا قرب کیا روشن کرے

    یا تو اس جنگل میں نکلے چاند تیرے نام کا

    یا مرا ہی لفظ میرا راستا روشن کرے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    عرفان صدیقی

    عرفان صدیقی

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کوئی بجلی ان خرابوں میں گھٹا روشن کرے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY