میں نظر سے پی رہا ہوں یہ سماں بدل نہ جائے

انور مرزاپوری

میں نظر سے پی رہا ہوں یہ سماں بدل نہ جائے

انور مرزاپوری

MORE BY انور مرزاپوری

    میں نظر سے پی رہا ہوں یہ سماں بدل نہ جائے

    نہ جھکاؤ تم نگاہیں کہیں رات ڈھل نہ جائے

    i am feasting from thine eyes, pray let this aspect be

    lower not your eyes my love, or else this night may flee

    مرے اشک بھی ہیں اس میں یہ شراب ابل نہ جائے

    مرا جام چھونے والے ترا ہاتھ جل نہ جائے

    my tears too this does contain,this wine may start to boil

    be careful for my goblet burns with rare intensity

    ابھی رات کچھ ہے باقی نہ اٹھا نقاب ساقی

    ترا رند گرتے گرتے کہیں پھر سنبھل نہ جائے

    as yet the night does linger on do not remove your veil

    lest your besotten follower re-gains stability

    مری زندگی کے مالک مرے دل پہ ہاتھ رکھنا

    ترے آنے کی خوشی میں مرا دم نکل نہ جائے

    place your hand upon my heart, o master of my life

    lest the joy of your approach becomes the end of me

    مجھے پھونکنے سے پہلے مرا دل نکال لینا

    یہ کسی کی ہے امانت مرے ساتھ جل نہ جائے

    please remove my heart before i am consigned to flames

    As it belongs to someone else it should not burn with me

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    اقبال بانو

    اقبال بانو

    منی بیگم

    منی بیگم

    امید علی خان

    امید علی خان

    اقبال بانو

    اقبال بانو

    امید علی خان

    امید علی خان

    Pooja Mehra Gupta

    Pooja Mehra Gupta

    مہدی حسن

    مہدی حسن

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY