شکوہ نصیب کا نہ کرے بار بار تو

ببلس ھورہ صبا

شکوہ نصیب کا نہ کرے بار بار تو

ببلس ھورہ صبا

MORE BYببلس ھورہ صبا

    شکوہ نصیب کا نہ کرے بار بار تو

    مشکل حیات ہنس کے ہمیشہ گزار تو

    کیوں فکر حال و ماضی کی کرتا ہے روز و شب

    سب اس کو اختیار ہے بے اختیار تو

    مایوس کیوں جفاؤں سے ہوتا ہے بے وجہ

    سب کے گلے میں ڈال وفاؤں کے ہار تو

    خوددار بن خودی کی طلب لے کے جی سدا

    بے فکر اس پہ جان بھی کر دے نثار تو

    وہ سر پرست ہے تو صباؔ تجھ کو ناز ہے

    اپنا مقام جان لے خود کو سنوار تو

    مأخذ :
    • کتاب : Ehsaas (Pg. 117)
    • Author : Bubbles Hora Saba
    • مطبع : Bubbles Hora Saba

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY