مہرباں کوئی نظر آئے تو سمجھوں تو ہے

خالد شریف

مہرباں کوئی نظر آئے تو سمجھوں تو ہے

خالد شریف

MORE BYخالد شریف

    مہرباں کوئی نظر آئے تو سمجھوں تو ہے

    پھول مہکیں تو یہ جانوں کہ تری خوشبو ہے

    عقل تسلیم نہیں کرتی پہ دل مانتا ہے

    وہ کوئی معجزہ ہے وہم ہے یا جادو ہے

    اب ترا ذکر کریں گے نہ تجھے یاد کبھی

    ہاں مگر دل کے دھڑکنے پہ کسے قابو ہے

    کچھ مزاج اپنا ہی بیگانہ ہوا جاتا ہے

    ورنہ اس شخص کی تو نرم روی کی خو ہے

    غم رگ و پے میں اترتا ہے لہو کی صورت

    درد پلکوں پہ لرزتا ہوا اک آنسو ہے

    آج کچھ رنگ دگر ہے مرے گھر کا خالدؔ

    سوچتا ہوں یہ تری یاد ہے یا خود تو ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY