میرے لب پر کوئی دعا ہی نہیں

فانی بدایونی

میرے لب پر کوئی دعا ہی نہیں

فانی بدایونی

MORE BY فانی بدایونی

    میرے لب پر کوئی دعا ہی نہیں

    اس کرم کی کچھ انتہا ہی نہیں

    کشتئ اعتبار توڑ کے دیکھ

    کہ خدا بھی ہے نا خدا ہی نہیں

    میری ہستی گواہ ہے کہ مجھے

    تو کسی وقت بھولتا ہی نہیں

    اب اسے ناامید کیوں کہیے

    دل کو توفیق مدعا ہی نہیں

    غم میں لذت کہاں کہ دل نہ رہا

    ہائے وہ حسرت آشنا ہی نہیں

    وہی تو ہے وہی تری محفل

    ایک فانیؔ مبتلا ہی نہیں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    میرے لب پر کوئی دعا ہی نہیں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY