مستحق وہ لذت غم کا نہیں

علی احمد جلیلی

مستحق وہ لذت غم کا نہیں

علی احمد جلیلی

MORE BYعلی احمد جلیلی

    مستحق وہ لذت غم کا نہیں

    جس نے خود اپنا لہو چکھا نہیں

    اس شجر کے سائے میں بیٹھا ہوں میں

    جس کی شاخوں پر کوئی پتا نہیں

    کون دیتا ہے در دل پر صدا

    کہہ دو میں بھی اب یہاں رہتا نہیں

    بن رہے ہیں سطح دل پر دائرے

    تم نے تو پتھر کوئی پھینکا نہیں

    انگلیاں کانٹوں سے زخمی ہو گئیں

    ہاتھ پھولوں تک ابھی پہنچا نہیں

    ایک خوشبو ساتھ جو پل بھر رہی

    عمر بھر پیچھا مرا چھوڑا نہیں

    وہ مقام فکر ہے مرا علیؔ

    جس بلندی تک کوئی پہنچا نہیں

    مأخذ :
    • کتاب : Mujalla Dastavez (Pg. 241)
    • Author : Aziz Nabeel
    • مطبع : Edarah Dastavez (2010)
    • اشاعت : 2010

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY