نکلا ہے چاند شب کی پذیرائی کے لئے

شہریار

نکلا ہے چاند شب کی پذیرائی کے لئے

شہریار

MORE BYشہریار

    نکلا ہے چاند شب کی پذیرائی کے لئے

    یہ عذر کم ہے انجمن آرائی کے لئے

    تھا بولنا تو ہو گئے خاموش ہم سبھی

    کیا کچھ کیا ہے شہرت و رسوائی کے لئے

    پل بھر میں کیسے لوگ بدل جاتے ہیں یہاں

    دیکھو کہ یہ مفید ہے بینائی کے لئے

    سرسبز میری شاخ ہنر کیوں نہیں ہوئی

    یہ مسئلہ ہے تیرے تمنائی کے لئے

    ہے آج یہ گلہ کہ اکیلا ہے شہریارؔ

    ترسو گے کل ہجوم میں تنہائی کے لئے

    مأخذ :
    • کتاب : sooraj ko nikalta dekhoon (Pg. 506)
    • Author : shaharyar
    • مطبع : educational book house (2013)
    • اشاعت : 2013

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY