انسان میں حیوان یہاں بھی ہے وہاں بھی

ندا فاضلی

انسان میں حیوان یہاں بھی ہے وہاں بھی

ندا فاضلی

MORE BYندا فاضلی

    INTERESTING FACT

    This ghazal is written on similar kinds of social issues prevailing both in India and Pakistan.

    انسان میں حیوان یہاں بھی ہے وہاں بھی

    اللہ نگہبان یہاں بھی ہے وہاں بھی

    خوں خوار درندوں کے فقط نام الگ ہیں

    ہر شہر بیابان یہاں بھی ہے وہاں بھی

    ہندو بھی سکوں سے ہے مسلماں بھی سکوں سے

    انسان پریشان یہاں بھی ہے وہاں بھی

    رحمان کی رحمت ہو کہ بھگوان کی مورت

    ہر کھیل کا میدان یہاں بھی ہے وہاں بھی

    اٹھتا ہے دل و جاں سے دھواں دونوں طرف ہی

    یہ میرؔ کا دیوان یہاں بھی ہے وہاں بھی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    نامعلوم

    نامعلوم

    مآخذ :
    • کتاب : Sheher Men Gaon (Pg. 380)
    • Author : Nida Fazli
    • مطبع : Miaar Publications (2012)
    • اشاعت : 2012

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY