کھلا ہے جھوٹ کا بازار آؤ سچ بولیں

قتیل شفائی

کھلا ہے جھوٹ کا بازار آؤ سچ بولیں

قتیل شفائی

MORE BY قتیل شفائی

    کھلا ہے جھوٹ کا بازار آؤ سچ بولیں

    نہ ہو بلا سے خریدار آؤ سچ بولیں

    سکوت چھایا ہے انسانیت کی قدروں پر

    یہی ہے موقع اظہار آؤ سچ بولیں

    ہمیں گواہ بنایا ہے وقت نے اپنا

    بنام عظمت کردار آؤ سچ بولیں

    سنا ہے وقت کا حاکم بڑا ہی منصف ہے

    پکار کر سر دربار آؤ سچ بولیں

    تمام شہر میں کیا ایک بھی نہیں منصور

    کہیں گے کیا رسن و دار آؤ سچ بولیں

    بجا کہ خوئے وفا ایک بھی حسیں میں نہیں

    کہاں کے ہم بھی وفادار آؤ سچ بولیں

    جو وصف ہم میں نہیں کیوں کریں کسی میں تلاش

    اگر ضمیر ہے بیدار آؤ سچ بولیں

    چھپائے سے کہیں چھپتے ہیں داغ چہرے کے

    نظر ہے آئنہ بردار آؤ سچ بولیں

    قتیلؔ جن پہ سدا پتھروں کو پیار آیا

    کدھر گئے وہ گنہ گار آؤ سچ بولیں

    Tagged Under

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY