شام سے آنکھ میں نمی سی ہے

گلزار

شام سے آنکھ میں نمی سی ہے

گلزار

MORE BY گلزار

    شام سے آنکھ میں نمی سی ہے

    آج پھر آپ کی کمی سی ہے

    دفن کر دو ہمیں کہ سانس آئے

    نبض کچھ دیر سے تھمی سی ہے

    کون پتھرا گیا ہے آنکھوں میں

    برف پلکوں پہ کیوں جمی سی ہے

    وقت رہتا نہیں کہیں ٹک کر

    عادت اس کی بھی آدمی سی ہے

    آئیے راستے الگ کر لیں

    یہ ضرورت بھی باہمی سی ہے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    آشا بھوسلے

    آشا بھوسلے

    مکیش

    مکیش

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY