شب کس سے یہ ہم جدا رہے ہیں

قائم چاندپوری

شب کس سے یہ ہم جدا رہے ہیں

قائم چاندپوری

MORE BYقائم چاندپوری

    شب کس سے یہ ہم جدا رہے ہیں

    تا صبح نپٹ خفا رہے ہیں

    آنا ہے تو آ وگرنہ پیارے

    ہم آپ سے آج جا رہے ہیں

    بیٹھیں پس کار خویش کیوں کر

    جو ناز ترے اٹھا رہے ہیں

    ویرانے سے میرے ڈر نہ اے چغد

    اک وقت تو یاں ہما رہے ہیں

    اے ہستی تو کھینچ نقش باطل

    ہم ہیں تو اسے مٹا رہے ہیں

    پھر عازم گریہ ہوں کہ طوفاں

    جوں ابر نظر میں چھا رہے ہیں

    رونا ہے اگر یہی تو قائمؔ

    اک خلق کو ہم ڈبا رہے ہیں

    مأخذ :
    • Deewan-e-Qaem Chandpuri (Rekhta Website)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY