شکوہ زبان سے نہ کبھی آشنا ہوا

معین احسن جذبی

شکوہ زبان سے نہ کبھی آشنا ہوا

معین احسن جذبی

MORE BYمعین احسن جذبی

    شکوہ زبان سے نہ کبھی آشنا ہوا

    نظروں سے کہہ دیا جو مرا مدعا ہوا

    اللہ ری بے خودی کہ چلا جا رہا ہوں میں

    منزل کو دیکھتا ہوا کچھ سوچتا ہوا

    دنیا لرز گئی دل ایذا پسند کی

    ناآشنائے درد جو درد آشنا ہوا

    پھر اے دل شکستہ کوئی نغمہ چھیڑ دے

    پھر آ رہا ہے کوئی ادھر جھومتا ہوا

    مآخذ:

    • کتاب : Kulliyat-e-Jazbi (Pg. 30)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY