تسبیح و سجدہ گاہ بھی سجدہ بھی مست مست

جاوید صبا

تسبیح و سجدہ گاہ بھی سجدہ بھی مست مست

جاوید صبا

MORE BY جاوید صبا

    تسبیح و سجدہ گاہ بھی سجدہ بھی مست مست

    قبلہ بھی مست مست ہے کعبہ بھی مست مست

    قطرہ بھی اپنی موج میں دجلہ بھی موج میں

    دریا بھی مست مست ہے صحرا بھی مست مست

    خورشید و ماہتاب بھی ذرہ بھی بے دماغ

    ادنیٰ و پست و ارفع و اعلیٰ بھی مست مست

    میرا وجود اور وجود عدم بھی مست

    پنہاں بھی مست مست ہے پیدا بھی مست مست

    آئینہ عکس اور پس آئینہ بھی مست

    پوشیدہ مست خواب ہویدا بھی مست مست

    عالی جناب قبلہ و کعبہ حضور من

    میں ہی نہیں ہوں قبلہ و کعبہ بھی مست مست

    ساغر صراحی جام پیالہ بھی مست مست

    ساقی بھی مست مست ہے صہبا بھی مست مست

    یخ بستگی بھی مست ہے اور آہ سرد بھی

    چنگاری آگ آگ کا شعلہ بھی مست مست

    اے بے خودی سلام تجھے تیرا شکریہ

    دنیا بھی مست مست ہے عقبیٰ بھی مست مست

    کچھ تیری مدھ بھری ہوئی آنکھیں بھی مست ہیں

    کچھ ان کے ساتھ ساتھ زمانہ بھی مست مست

    RECITATIONS

    جاوید صبا

    جاوید صبا

    جاوید صبا

    تسبیح و سجدہ گاہ بھی سجدہ بھی مست مست جاوید صبا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY