یہ آرزو تھی تجھے گل کے رو بہ رو کرتے

حیدر علی آتش

یہ آرزو تھی تجھے گل کے رو بہ رو کرتے

حیدر علی آتش

MORE BYحیدر علی آتش

    یہ آرزو تھی تجھے گل کے رو بہ رو کرتے

    ہم اور بلبل بیتاب گفتگو کرتے

    پیامبر نہ میسر ہوا تو خوب ہوا

    زبان غیر سے کیا شرح آرزو کرتے

    مری طرح سے مہ و مہر بھی ہیں آوارہ

    کسی حبیب کی یہ بھی ہیں جستجو کرتے

    ہمیشہ رنگ زمانہ بدلتا رہتا ہے

    سفید رنگ ہیں آخر سیاہ مو کرتے

    لٹاتے دولت دنیا کو میکدے میں ہم

    طلائی ساغر مے نقرئی سبو کرتے

    ہمیشہ میں نے گریباں کو چاک چاک کیا

    تمام عمر رفوگر رہے رفو کرتے

    جو دیکھتے تری زنجیر زلف کا عالم

    اسیر ہونے کی آزاد آرزو کرتے

    بیاض گردن جاناں کو صبح کہتے جو ہم

    ستارۂ سحری تکمۂ گلو کرتے

    یہ کعبے سے نہیں بے وجہ نسبت رخ یار

    یہ بے سبب نہیں مردے کو قبلہ رو کرتے

    سکھاتے نالۂ شبگیر کو در اندازی

    غم فراق کا اس چرخ کو عدو کرتے

    وہ جان جاں نہیں آتا تو موت ہی آتی

    دل و جگر کو کہاں تک بھلا لہو کرتے

    نہ پوچھ عالم برگشتہ طالعی آتشؔ

    برستی آگ جو باراں کی آرزو کرتے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    اسد امانت علی

    اسد امانت علی

    ٹینا ثانی

    ٹینا ثانی

    حامد علی خان

    حامد علی خان

    سیان چودھری

    سیان چودھری

    امانت علی خان

    امانت علی خان

    شفقت امانت علی

    شفقت امانت علی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY