اردو

MORE BYراشد بنارسی

    جبین وقت پر کیسی شکن ہے ہم نہیں سمجھے

    کوئی کیوں کر حریف علم و فن ہے ہم نہیں سمجھے

    کسی بھی شمع سے بے زار کیوں ہو کوئی پروانہ

    یہ کیا اس دور کا دیوانہ پن ہے ہم نہیں سمجھے

    بہت سمجھے تھے ہم اس دور کی فرقہ پرستی کو

    زباں بھی آج شیخ و برہمن ہے ہم نہیں سمجھے

    اگر اردو پہ بھی الزام ہے باہر سے آنے کا

    تو پھر ہندوستاں کس کا وطن ہے ہم نہیں

    چمن کا حسن تو ہر رنگ کے پھولوں سے ہے راشدؔ

    کوئی بھی پھول کیوں ننگ چمن ہے ہم نہیں سمجھے

    موضوعات :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY