Ahmad Shahryar's Photo'

احمد شہریار

1983 | ایران

ایران میں مقیم معروف پاکستانی شاعر

ایران میں مقیم معروف پاکستانی شاعر

غزل 14

اشعار 15

سالگرہ پر کتنی نیک تمنائیں موصول ہوئیں

لیکن ان میں ایک مبارک باد ابھی تک باقی ہے

  • شیئر کیجیے

نہ دستکیں نہ صدا کون در پہ آیا ہے

فقیر شہر ہے یا شہریار دیکھئے گا

راتوں کو جاگتے ہیں اسی واسطے کہ خواب

دیکھے گا بند آنکھیں تو پھر لوٹ جائے گا

  • شیئر کیجیے

قطرہ ٹھیک ہے دریا ہونے میں نقصان بہت ہے

دیکھ تو کیسے ڈوب رہا ہے میرا لشکر مجھ میں

فقیر شہر بھی رہا ہوں شہریارؔ بھی مگر

جو اطمینان فقر میں ہے تاج و تخت میں نہیں