aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر
Ajmal Siddiqui's Photo'

اجمل صدیقی

1981 | دلی, انڈیا

اجمل صدیقی

غزل 11

اشعار 11

آس پہ تیری بکھرا دیتا ہوں کمرے کی سب چیزیں

آس بکھرنے پر سب چیزیں خود ہی اٹھا کے رکھتا ہوں

بول پڑتا تو مری بات مری ہی رہتی

خامشی نے ہیں دئے سب کو فسانے کیا کیا

بازار میں اک چیز نہیں کام کی میرے

یہ شہر مری جیب کا رکھتا ہے بھرم خوب

کبھی خوف تھا ترے ہجر کا کبھی آرزو کے زوال کا

رہا ہجر و وصل کے درمیاں تجھے کھو سکا نہ میں پا سکا

ہر ایک صبح وضو کرتی ہیں مری آنکھیں

کہ شاید آج تو آ جائے وہ حبیب نظر

متعلقہ بلاگ

 

متعلقہ شعرا

"دلی" کے مزید شعرا

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے