noImage

عطا الرحمن جمیل

عطا الرحمن جمیل کی تمام

غزل 7

اشعار 7

آنے والی آ نہیں چکتی جانے والی جا بھی چکی

ویسے تو ہر جانے والی رات تھی آنے والی رات

یہ دنیا ہے یہاں ہر آبگینہ ٹوٹ جاتا ہے

کہیں چھپتے پھرو آخر زمانہ ڈھونڈھ ہی لے گا

ان کو بھی جمیلؔ اپنے مقدر سے گلہ ہے

وہ لوگ جو سنتے تھے کہ چالاک بہت ہیں

کچھ خواب کچھ خیال میں مستور ہو گئے

تم کیا قریب نکلے کہ سب دور ہو گئے

تمہاری بزم سے جب بھی اٹھے تو حال زدہ

کبھی جواب کے مارے کبھی سوال زدہ

کتاب 1

دور دیس سے

 

2005