Azhar Adeeb's Photo'

اظہر ادیب

1949 | گھوٹکی, پاکستان

شاعر،انشائیہ نگار اور ادیب

شاعر،انشائیہ نگار اور ادیب

غزل 16

اشعار 34

ہم نے گھر کی سلامتی کے لئے

خود کو گھر سے نکال رکھا ہے

تو اپنی مرضی کے سبھی کردار آزما لے

مرے بغیر اب تری کہانی نہیں چلے گی

  • شیئر کیجیے

لہجے اور آواز میں رکھا جاتا ہے

اب تو زہر الفاظ میں رکھا جاتا ہے

ایک لمحے کو سہی اس نے مجھے دیکھا تو ہے

آج کا موسم گزشتہ روز سے اچھا تو ہے

  • شیئر کیجیے

ہمیں روکو نہیں ہم نے بہت سے کام کرنے ہیں

کسی گل میں مہکنا ہے کسی بادل میں رہنا ہے

  • شیئر کیجیے