noImage

عزیز حیدرآبادی

عزیز حیدرآبادی

غزل 18

اشعار 25

زور قسمت پہ چل نہیں سکتا

خامشی اختیار کرتا ہوں

  • شیئر کیجیے

اس نے سن کر بات میری ٹال دی

الجھنوں میں اور الجھن ڈال دی

  • شیئر کیجیے

دنیا کی روش دیکھی تری زلف دوتا میں

بنتی ہے یہ مشکل سے بگڑتی ہے ذرا میں

  • شیئر کیجیے

مشکل ہے امتیاز عذاب و ثواب میں

پیتا ہوں میں شراب ملا کر گلاب میں

  • شیئر کیجیے

گن رہا ہوں حرف ان کے عہد کے

مجھ کو دھوکا دے رہی ہے یاد کیا

  • شیئر کیجیے