فریحہ نقوی

غزل 21

نظم 9

اشعار 18

ہم تحفے میں گھڑیاں تو دے دیتے ہیں

اک دوجے کو وقت نہیں دے پاتے ہیں

تمہارے رنگ پھیکے پڑ گئے ناں؟

مری آنکھوں کی ویرانی کے آگے

  • شیئر کیجیے

زمانے اب ترے مد مقابل

کوئی کمزور سی عورت نہیں ہے

دے رہے ہیں لوگ میرے دل پہ دستک بار بار

دل مگر یہ کہہ رہا ہے صرف تو اور صرف تو

  • شیئر کیجیے

تمہیں پتا ہے مرے ہاتھ کی لکیروں میں

تمہارے نام کے سارے حروف بنتے ہیں

  • شیئر کیجیے

متعلقہ شعرا

"لاہور" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے