Hashim Raza Jalalpuri's Photo'

ہاشم رضا جلالپوری

1987 | دلی, ہندوستان

غزل 29

اشعار 5

گریباں چاک، دھواں، جام، ہاتھ میں سگریٹ

شب فراق، عجب حال میں پڑا ہوا ہوں

محفل میں لوگ چونک پڑے میرے نام پر

تم مسکرا دئے مری قیمت یہی تو ہے

ساری رسوائی زمانے کی گوارا کر کے

زندگی جیتے ہیں کچھ لوگ خسارہ کر کے

ہم سے آباد ہے یہ شعر و سخن کی محفل

ہم تو مر جائیں گے لفظوں سے کنارہ کر کے

ہم بے نیاز بیٹھے ہوئے ان کی بزم میں

اوروں کی بندگی کا اثر دیکھتے رہے

  • شیئر کیجیے

"دلی" کے مزید شعرا

  • شاہ نصیر شاہ نصیر
  • داغؔ دہلوی داغؔ دہلوی
  • بیخود دہلوی بیخود دہلوی
  • آبرو شاہ مبارک آبرو شاہ مبارک
  • مومن خاں مومن مومن خاں مومن
  • شیخ ابراہیم ذوقؔ شیخ ابراہیم ذوقؔ
  • مرزا غالب مرزا غالب
  • بہادر شاہ ظفر بہادر شاہ ظفر
  • ظہیرؔ دہلوی ظہیرؔ دہلوی
  • تاباں عبد الحی تاباں عبد الحی