Ibrahim Ashk's Photo'

ابراہیم اشکؔ

1951 | ممبئی, ہندوستان

فلم ’کہو نہ پیار ہے‘ کے نغموں کے لیے مشہور

فلم ’کہو نہ پیار ہے‘ کے نغموں کے لیے مشہور

غزل 18

اشعار 18

تری زمیں سے اٹھیں گے تو آسماں ہوں گے

ہم ایسے لوگ زمانے میں پھر کہاں ہوں گے

زندگی وادی و صحرا کا سفر ہے کیوں ہے

اتنی ویران مری راہگزر ہے کیوں ہے

بس ایک بار ہی توڑا جہاں نے عہد وفا

کسی سے ہم نے پھر عہد وفا کیا ہی نہیں

دوہا 3

پیاسی دھرتی دیکھ کے بادل اڑ اڑ جائے

یہ دنیا کی ریت ہے ترسے کو ترسائے

  • شیئر کیجیے

پتھر میں بھی آگ ہے چھیڑو تو جل جائے

جو اس آگ میں تپ گیا وہ ہیرا کہلائے

  • شیئر کیجیے

من کے اندر پی بسے پی کے اندر پریت

خود میں اتنا ڈوب جا مل جائے گا میت

  • شیئر کیجیے
 

ای- کتاب 9

آگہی

 

1996

اللہ ہی اللہ

 

2010

انداز بیاں اور

 

2002

فن اور فنکار: ابراہیم اشک

 

2005

ابراہیم اشک: تجربہ کار رباعی گو

 

2008

الہام

 

1991

محافظ ملت علامہ اقبال

 

2007

نیا منظر نامہ

مظہر سلیم کے منتخب افسانے

2007

تنقیدی شعور

 

2004

 

ویڈیو 18

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر
At a mushaira

ابراہیم اشکؔ

At a mushaira

ابراہیم اشکؔ

At Abu Dhabi Mushaira

ابراہیم اشکؔ

At Datia Mushaira

ابراہیم اشکؔ

Main khwabon me to dariya dekhta hoon

ابراہیم اشکؔ

Nazm Kachcha Ghar recited by Ibrahim Ashk

ابراہیم اشکؔ

Reciting his own nazm

ابراہیم اشکؔ

Reciting his own Nazm - Aakhri Khat

ابراہیم اشکؔ

Reciting his own Nazm - Maa

ابراہیم اشکؔ

Reciting own poetry

ابراہیم اشکؔ

Reciting own poetry

ابراہیم اشکؔ

Ibrahim Ashk

ابراہیم اشکؔ

شعرا متعلقہ

  • شہاب جعفری شہاب جعفری استاد

شعرا کے مزید "ممبئی"

  • والی آسی والی آسی
  • خورشید طلب خورشید طلب
  • شعیب نظام شعیب نظام
  • ابو الحسنات حقی ابو الحسنات حقی
  • اختر پیامی اختر پیامی
  • ارشد عبد الحمید ارشد عبد الحمید
  • اسلم محمود اسلم محمود
  • احمد شناس احمد شناس
  • رشید کوثر فاروقی رشید کوثر فاروقی
  • رسا رامپوری رسا رامپوری