Iqbal Azeem's Photo'

اقبال عظیم

1913 - 2000 | کراچی, پاکستان

اقبال عظیم

غزل 25

اشعار 22

جھک کر سلام کرنے میں کیا حرج ہے مگر

سر اتنا مت جھکاؤ کہ دستار گر پڑے

  • شیئر کیجیے

آدمی جان کے کھاتا ہے محبت میں فریب

خود فریبی ہی محبت کا صلہ ہو جیسے

  • شیئر کیجیے

ہم بہت دور نکل آئے ہیں چلتے چلتے

اب ٹھہر جائیں کہیں شام کے ڈھلتے ڈھلتے

یوں سر راہ ملاقات ہوئی ہے اکثر

اس نے دیکھا بھی نہیں ہم نے پکارا بھی نہیں

  • شیئر کیجیے

قاتل نے کس صفائی سے دھوئی ہے آستیں

اس کو خبر نہیں کہ لہو بولتا بھی ہے

کتاب 3

 

تصویری شاعری 1

 

ویڈیو 34

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر

اقبال عظیم

اقبال عظیم

اقبال عظیم

اقبال عظیم

اقبال عظیم

اقبال عظیم

اقبال عظیم

اقبال عظیم

اقبال عظیم

Reciting own poetry

اقبال عظیم

آپ میری طبیعت سے واقف نہیں مجھ کو بے_جا تکلف کی عادت نہیں

اقبال عظیم

آنکھوں سے نور دل سے خوشی چھین لی گئی

اقبال عظیم

اپنے ماضی سے جو ورثے میں ملے ہیں ہم کو (ردیف .. ے)

اقبال عظیم

اپنے مرکز سے اگر دور نکل جاؤ_گے

اقبال عظیم

اللہ رے یادوں کی یہ انجمن_آرائی

اقبال عظیم

بالاہتمام ظلم کی تجدید کی گئی

اقبال عظیم

زہر دے دے نہ کوئی گھول کے پیمانے میں

اقبال عظیم

سب سمجھتے ہیں کہ ہم کس کارواں کے لوگ ہیں

اقبال عظیم

ضبط بھی چاہئے ظرف بھی چاہئے اور محتاط پاس_وفا چاہئے

اقبال عظیم

مانا کہ زندگی سے ہمیں کچھ ملا بھی ہے

اقبال عظیم

نقش ماضی کے جو باقی ہیں مٹا مت دینا

اقبال عظیم

کچھ ایسے زخم بھی در_پردہ ہم نے کھائے ہیں

اقبال عظیم

آڈیو 5

سب سمجھتے ہیں کہ ہم کس کارواں کے لوگ ہیں

ضبط بھی چاہئے ظرف بھی چاہئے اور محتاط پاس_وفا چاہئے

مانا کہ زندگی سے ہمیں کچھ ملا بھی ہے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

متعلقہ شعرا

"کراچی" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے