Kaif Azimabadi's Photo'

کیف عظیم آبادی

1937

غزل 5

 

اشعار 4

دیوار و در پہ خون کے چھینٹے ہیں جا بہ جا

بکھرا ہوا ہے رنگ حنا تیرے شہر میں

  • شیئر کیجیے

تم سمندر کی رفاقت پہ بھروسہ نہ کرو

تشنگی لب پہ سجائے ہوے مر جاؤ گے

خوشبوئے حنا کہنا نرمیٔ صبا کہنا

جو زخم ملے تم کو پھولوں کی قبا کہنا

  • شیئر کیجیے

کتاب 3

انگنائی

 

1987

اپنے لہو کا رنگ

 

1988

صداؤں کے سائے

 

1982