خورشید طلب

غزل 25

اشعار 21

روز دیوار میں چن دیتا ہوں میں اپنی انا

روز وہ توڑ کے دیوار نکل آتی ہے

  • شیئر کیجیے

ہمیں ہر وقت یہ احساس دامن گیر رہتا ہے

پڑے ہیں ڈھیر سارے کام اور مہلت ذرا سی ہے

کوئی چراغ جلاتا نہیں سلیقے سے

مگر سبھی کو شکایت ہوا سے ہوتی ہے

ہوا تو ہے ہی مخالف مجھے ڈراتا ہے کیا

ہوا سے پوچھ کے کوئی دیئے جلاتا ہے کیا

مری مشکل مری مشکل نہیں ہے

وسیلہ تیری آسانی کا میں ہوں

آڈیو 11

بڑا عجیب تھا اس کا وداع ہونا بھی

پلٹ کے جانب_اہل_و_عیال دیکھتا ہوں

دھواں اڑاتے ہوئے دن کو رات کرتے ہوئے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

"بکارو" کے مزید شعرا

  • غیاث انجم غیاث انجم