Kumar Pashi's Photo'

کمار پاشی

1935 - 1992 | دلی, انڈیا

ممتاز جدید شاعر،رسالہ "سطور" کے مدیر

ممتاز جدید شاعر،رسالہ "سطور" کے مدیر

کمار پاشی

غزل 27

نظم 28

اشعار 13

کچھ غزلیں ان زلفوں پر ہیں کچھ غزلیں ان آنکھوں پر

جانے والے دوست کی اب اک یہی نشانی باقی ہے

اوڑھ لیا ہے میں نے لبادا شیشے کا

اب مجھ کو کسی پتھر سے ٹکرانے دو

تیری یاد کا ہر منظر پس منظر لکھتا رہتا ہوں

دل کو ورق بناتا ہوں اور شب بھر لکھتا رہتا ہوں

کبھی دکھا دے وہ منظر جو میں نے دیکھے نہیں

کبھی تو نیند میں اے خواب کے فرشتے آ

کوئی تو ڈھونڈ کے مجھ کو کہیں سے لے آئے

کہ خود کو دیکھا نہیں ہے بہت زمانوں سے

کتاب 41

آڈیو 22

اپنے گرد_و_پیش کا بھی کچھ پتا رکھ

ایک کہانی ختم ہوئی ہے ایک کہانی باقی ہے

تیری یاد کا ہر منظر پس_منظر لکھتا رہتا ہوں

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

متعلقہ بلاگ

 

"دلی" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے