Meer Mehdi Majrooh's Photo'

میر مہدی مجروح

1833 - 1903 | دلی, ہندوستان

میر مہدی مجروح

غزل 20

اشعار 37

چرا کے مٹھی میں دل کو چھپائے بیٹھے ہیں

بہانا یہ ہے کہ مہندی لگائے بیٹھے ہیں

  • شیئر کیجیے

غیروں کو بھلا سمجھے اور مجھ کو برا جانا

سمجھے بھی تو کیا سمجھے جانا بھی تو کیا جانا

  • شیئر کیجیے

کیا ہماری نماز کیا روزہ

بخش دینے کے سو بہانے ہیں

  • شیئر کیجیے

یہ جو چپکے سے آئے بیٹھے ہیں

لاکھ فتنے اٹھائے بیٹھے ہیں

  • شیئر کیجیے

شغل الفت کو جو احباب برا کہتے ہیں

کچھ سمجھ میں نہیں آتا کہ یہ کیا کہتے ہیں

  • شیئر کیجیے

رباعی 7

کتاب 4

دیوان مجروح

 

1978

دیوان مجروح

 

1889

دیوان مجروح

مظہر معانی

1898

میر مہدی مجروح : حیات اور تصانیف

 

1999

 

متعلقہ شعرا

  • امیر مینائی امیر مینائی ہم عصر
  • مرزا غالب مرزا غالب استاد
  • میاں داد خاں سیاح میاں داد خاں سیاح ہم عصر

"دلی" کے مزید شعرا

  • مرزا غالب مرزا غالب
  • داغؔ دہلوی داغؔ دہلوی
  • شیخ ظہور الدین حاتم شیخ ظہور الدین حاتم
  • میر تقی میر میر تقی میر
  • شاہ نصیر شاہ نصیر
  • بیخود دہلوی بیخود دہلوی
  • آبرو شاہ مبارک آبرو شاہ مبارک
  • شیخ ابراہیم ذوقؔ شیخ ابراہیم ذوقؔ
  • حسرتؔ موہانی حسرتؔ موہانی
  • تاباں عبد الحی تاباں عبد الحی