Nasir Shahzad's Photo'

ناصر شہزاد

1937 - 2007 | اوکاڑہ, پاکستان

ناصر شہزاد

غزل 44

اشعار 32

پھر یوں ہوا کہ مجھ سے وہ یوں ہی بچھڑ گیا

پھر یوں ہوا کہ زیست کے دن یوں ہی کٹ گئے

  • شیئر کیجیے

اخروٹ کھائیں تاپیں انگیٹھی پہ آگ آ

رستے تمام گاؤں کے کہرے سے اٹ گئے

  • شیئر کیجیے

جب کہ تجھ بن نہیں موجود کوئی

اپنے ہونے کا یقیں کیسے کروں

  • شیئر کیجیے

تجھ سے بچھڑے گاؤں چھوٹا شہر میں آ کر بسے

تج دیئے سب سنگی ساتھی تیاگ ڈالا دیس بھی

  • شیئر کیجیے

تجھ سے ملی نگاہ تو دیکھا کہ درمیاں

چاندی کے آبشار تھے سونے کی راہ تھی

  • شیئر کیجیے

کتاب 2

 

متعلقہ شعرا

"اوکاڑہ" کے مزید شعرا

 

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے