Qaisar-ul-Jafri's Photo'

قیصر الجعفری

1926 - 2005 | ممبئی, ہندوستان

اپنی غزل " دیواروں سے مل کر رونا اچھا لگتا ہے " کے لئے مشہور

غزل 43

اشعار 27

رکھی نہ زندگی نے مری مفلسی کی شرم

چادر بنا کے راہ میں پھیلا گئی مجھے

فن وہ جگنو ہے جو اڑتا ہے ہوا میں قیصرؔ

بند کر لو گے جو مٹھی میں تو مر جائے گا

آج برسوں میں تو قسمت سے ملاقات ہوئی

آپ منہ پھیر کے بیٹھے ہیں یہ کیا بات ہوئی

ای- کتاب 1

رنگ حنا

 

1964

 

ویڈیو 12

This video is playing from YouTube

سیکشن سے ویڈیو
کلام شاعر بہ زبان شاعر
Chandni tha ke ghazal tha ke saba tha kya tha

قیصر الجعفری

Chura loon agar bura na lage

قیصر الجعفری

Qaisar ul jafri at a mushaira

قیصر الجعفری

سیکشن سے ویڈیو
دیگر ویڈیو
Ham tere shahar men aaye hain musafir ki tarah

غلام علی

hum tere shaher aaye hai musafir ki tarah

غلام علی

انورادھا پوڈوال

انورادھا پوڈوال

بستی میں ہے وہ سناٹا جنگل مات لگے

روپ کمار

تمہارے شہر کا موسم بڑا سہانا لگے

گلشن آرا سید

تمہارے شہر کا موسم بڑا سہانا لگے

منی بیگم

دیواروں سے مل کر رونا اچھا لگتا ہے

پنکج اداس

دیواروں سے مل کر رونا اچھا لگتا ہے

پنکج اداس

دیواروں سے مل کر رونا اچھا لگتا ہے

منی بیگم

آڈیو 9

برسوں کے رت_جگوں کی تھکن کھا گئی مجھے

تری بے_وفائی کے بعد بھی مرے دل کا پیار نہیں گیا

دشت_تنہائی میں کل رات ہوا کیسی تھی

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

مزید دیکھیے

کے مزید شاعر "ممبئی"

  • راجندر سنگھ بیدی راجندر سنگھ بیدی
  • ذاکر خان ذاکر ذاکر خان ذاکر
  • اختر آزاد اختر آزاد
  • کرشن چندر کرشن چندر
  • راجہ مہدی علی خاں راجہ مہدی علی خاں
  • اظہر ہاشمی اظہر ہاشمی
  • حسن کمال حسن کمال
  • زہرا قرار زہرا قرار
  • رفیعہ شبنم عابدی رفیعہ شبنم عابدی
  • فاروق رحمان فاروق رحمان

Added to your favorites

Removed from your favorites