Saeed Qais's Photo'

سعید قیس

- 2018 | بحرین

سعید قیس کی تمام

غزل 18

اشعار 9

چاند مشرق سے نکلتا نہیں دیکھا میں نے

تجھ کو دیکھا ہے تو تجھ سا نہیں دیکھا میں نے

یہ واقعہ مری آنکھوں کے سامنے کا ہے

شراب ناچ رہی تھی گلاس بیٹھے رہے

تم اپنے دریا کا رونا رونے آ جاتے ہو

ہم تو اپنے سات سمندر پیچھے چھوڑ آئے ہیں

چہرہ چہرہ غم ہے اپنے منظر میں

اور آنکھوں کے پیچھے ایک نمائش ہے

تم سے ملنے کا بہانہ تک نہیں

اور بچھڑ جانے کے حیلے ہیں بہت

کتاب 1

کلیات سعید قیس

 

2016

 

مزید دیکھیے

متعلقہ شعرا

  • خورشید علیگ خورشید علیگ شاگرد