غزل 6

اشعار 2

نکال لایا ہوں ایک پنجرے سے اک پرندہ

اب اس پرندے کے دل سے پنجرہ نکالنا ہے

کتاب عشق میں ہر آہ ایک آیت ہے

پر آنسوؤں کو حروف مقطعات سمجھ

  • شیئر کیجیے
 

تصویری شاعری 2

بڑے تحمل سے رفتہ رفتہ نکالنا ہے بچا ہے جو تجھ میں میرا حصہ نکالنا ہے یہ روح برسوں سے دفن ہے تم مدد کرو_گے بدن کے ملبے سے اس کو زندہ نکالنا ہے نظر میں رکھنا کہیں کوئی غم_شناس گاہک مجھے سخن بیچنا ہے خرچہ نکالنا ہے نکال لایا ہوں ایک پنجرے سے اک پرندہ اب اس پرندے کے دل سے پنجرہ نکالنا ہے یہ تیس برسوں سے کچھ برس پیچھے چل رہی ہے مجھے گھڑی کا خراب پرزہ نکالنا ہے خیال ہے خاندان کو اطلاع دے دوں جو کٹ گیا اس شجر کا شجرہ نکالنا ہے میں ایک کردار سے بڑا تنگ ہوں قلم_کار مجھے کہانی میں ڈال غصہ نکالنا ہے

 

ویڈیو 5

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
کلام شاعر بہ زبان شاعر
بڑے تحمل سے رفتہ رفتہ نکالنا ہے

عمیر نجمی

جہان بھر کی تمام آنکھیں نچوڑ کر جتنا نم بنے_گا

عمیر نجمی

دائیں بازو میں گڑا تیر نہیں کھینچ سکا

عمیر نجمی

مری بھنووں کے عین درمیان بن گیا

عمیر نجمی

متعلقہ شعرا

  • علی زریون علی زریون ہم عصر
  • امیر امام امیر امام ہم عصر
  • سالم سلیم سالم سلیم ہم عصر
  • تہذیب حافی تہذیب حافی ہم عصر

"رحیم یار خان" کے مزید شعرا

  • باقی احمد پوری باقی احمد پوری
  • جبار واصف جبار واصف
  • کبیر اطہر کبیر اطہر
  • رضوانہ سعید روز رضوانہ سعید روز