ADVERTISEMENT

دنیا پر دوہے

دنیا کو ہم سب نے اپنی

اپنی آنکھ سے دیکھا اور برتا ہے اس عمل میں بہت کچھ ہمارا اپنا ہے جو کسی اور کا نہیں اور بہت کچھ ہم سے چھوٹ گیا ہے ۔ دنیا کو موضوع بنانے والے اس خوبصورت شعری انتخاب کو پڑھ کر آپ دنیا سے وابستہ ایسے اسرار سے واقف ہوں گے جن تک رسائی صرف تخلیقی اذہان ہی کا مقدر ہے ۔ ان اشعار کو پڑھ کر آپ دنیا کو ایک بڑے سیاق میں دیکھنے کے اہل ہوں گے ۔

میں بھی تو بھی یاتری چلتی رکتی ریل

اپنے اپنے گاؤں تک سب کا سب سے میل

ندا فاضلی
ADVERTISEMENT