حفیظ جالندھری

  • 1900-1982
  • لاھور

مقبول رومانی شاعر ، ملکہ پکھراج نے ان کی نظم ’ ابھی تو میں جوان ہوں‘ کو گا کر شہرت دی ، پاکستان کا قومی ترانہ لکھا

مقبول رومانی شاعر ، ملکہ پکھراج نے ان کی نظم ’ ابھی تو میں جوان ہوں‘ کو گا کر شہرت دی ، پاکستان کا قومی ترانہ لکھا

Editor Choiceمنتخب Popular Choiceمقبول
غزلصنف
0 ا ,اٹھو اب دیر ہوتی ہے وہاں چل کر سنور جانا0
0 ا ,اک بار پھر وطن میں گیا جا کے آ گیا0
0 ا ,او دل توڑ کے جانے والے دل کی بات بتاتا جا0
0 ا ,تیر چلے پہ نہ آنا کہ خطا ہو جانا0
0 ا ,حیات_جاوداں والے نے مارا0
0 ا ,دل کو ویرانہ کہو_گے مجھے معلوم نہ تھا0
0 ا ,زندگی کا لطف بھی آ جائے_گا0
0 ا ,عشق نے حسن کی بیداد پہ رونا چاہا0
0 ا ,کبھی زمیں پہ کبھی آسماں پہ چھائے جا0
0 ا ,کمبخت دل برا ہوا تری آہ آہ کا0
0 ا ,کوئی چارا نہیں دعا کے سوا0
0 ا ,کوئی دوا نہ دے سکے مشورۂ_دعا دیا0
0 ا ,مجھے شاد رکھنا کہ ناشاد رکھنا0
0 ا ,مضحکہ آؤ اڑائیں عشق_بے_بنیاد کا0
0 ر ,جلوۂ_حسن کو محروم_تماشائی کر0
0 ر ,کسی کے روبرو بیٹھا رہا میں بے_زباں ہو کر0
0 ل ,اگر موج ہے بیچ دھارے چلا چل0
0 مل جائے مے تو سجدۂ شکرانہ چاہیے0
0 ن ,ان کو جگر کی جستجو ان کی نظر کو کیا کروں0
0 ن ,اے دوست مٹ گیا ہوں فنا ہو گیا ہوں میں0
0 ن ,بے_تعلق زندگی اچھی نہیں0
0 ن ,ترے دل میں بھی ہیں کدورتیں ترے لب پہ بھی ہیں شکایتیں0
0 ن ,جہاں قطرے کو ترسایا گیا ہوں2
0 ن ,جوانی کے ترانے گا رہا ہوں0
0 ن ,چلے تھے ہم کہ سیر_گلشن_ایجاد کرتے ہیں0
0 ن ,حسن نے سیکھیں غریب_آزاریاں0
0 ن ,حیران نہ ہو دیکھ میں کیا دیکھ رہا ہوں0
0 ن ,دل سے ترا خیال نہ جائے تو کیا کروں0
0 ن ,دل_بے_مدعا ہے اور میں ہوں0
0 ن ,دوستی کا چلن رہا ہی نہیں0
0 ن ,رنگ بدلا یار نے وہ پیار کی باتیں گئیں0
0 ن ,کل ضرور آؤ_گے لیکن آج کیا کروں0
0 ن ,مٹنے والی حسرتیں ایجاد کر لیتا ہوں میں0
0 ن ,مستوں پہ انگلیاں نہ اٹھاؤ بہار میں0
0 ن ,وفاداریاں سخت نادانیاں ہیں0
0 و ,شیخ کا خوف ہمیں حشر کا دھڑکا ہم کو0
0 و ,عاشق سا بد_نصیب کوئی دوسرا نہ ہو0
0 و ,وہ قافلہ آرام_طلب ہو بھی تو کیا ہو0
0 ے ,آ ہی گیا وہ مجھ کو لحد میں اتارنے0
0 ے ,اب تو کچھ اور بھی اندھیرا ہے0
0 ے ,ابھرے جو خاک سے وہ تہ_خاک ہو گئے0
0 ے ,آخر ایک دن شاد کرو_گے0
0 ے ,اس شوخ نے نگاہ نہ کی ہم بھی چپ رہے0
0 ی ,ان تلخ آنسوؤں کو نہ یوں منہ بنا کے پی0
0 ے ,ان گیسوؤں میں شانۂ_ارماں نہ کیجئے0
0 ے ,آنے والے جانے والے ہر زمانے کے لیے0
0 ی ,پھر لطف_خلش دینے لگی یاد کسی کی0
0 ے ,خون بن کر مناسب نہیں دل بہے0
0 ے ,دل ابھی تک جوان ہے پیارے0
0 ے ,دور سے آنکھیں دکھاتی ہے نئی دنیا مجھے0
0 ی ,عرض_ہنر بھی وجہ_شکایات ہو گئی0
0 ی ,عشق کے ہاتھوں یہ ساری عالم_آرائی ہوئی0
0 ے ,عشق میں چھیڑ ہوئی دیدۂ_تر سے پہلے0
0 ے ,عشق نے عقل کو دیوانہ بنا رکھا ہے0
0 ے ,کیوں ہجر کے شکوے کرتا ہے کیوں درد کے رونے روتا ہے0
0 ے ,مجاز عین_حقیقت ہے با_صفا کے لیے0
0 ے ,مدتوں تک جو پڑھایا کیا استاد مجھے0
0 ی ,موت کے چہرے پہ ہے کیوں مردنی چھائی ہوئی0
0 ے ,نگاہ_آرزو_آموز کا چرچا نہ ہو جائے0
0 ی ,نہ کر دل_جوئی اے صیاد میری0
0 ے ,ہم ہی میں تھی نہ کوئی بات یاد نہ تم کو آ سکے0
0 ے ,ہے ازل کی اس غلط بخشی پہ حیرانی مجھے0
0 ے ,وہ ابر جو مے_خوار کی تربت پہ نہ برسے0
0 ے ,وہ سر_خوشی دے کہ زندگی کو شباب سے بہرہ_یاب کر دے0
0 ے ,یہ اور دور ہے اب اور کچھ نہ فرمائے0
0 ے ,یہ کیا مقام ہے وہ نظارے کہاں گئے0
0 ے ,یہ ملاقات ملاقات نہیں ہوتی ہے0
seek-warrow-w
  • 1
arrow-eseek-e1 - 67 of 67 items