Kashif Husain Ghair's Photo'

کاشف حسین غائر

1979 | کراچی, پاکستان

نئی نسل کے نمائندہ شاعر

نئی نسل کے نمائندہ شاعر

کاشف حسین غائر

غزل 33

اشعار 28

حال پوچھا نہ کرے ہاتھ ملایا نہ کرے

میں اسی دھوپ میں خوش ہوں کوئی سایہ نہ کرے

  • شیئر کیجیے

ہماری زندگی پر موت بھی حیران ہے غائرؔ

نہ جانے کس نے یہ تاریخ پیدائش نکالی ہے

  • شیئر کیجیے

ان ستاروں میں کہیں تم بھی ہو

ان نظاروں میں کہیں میں بھی ہوں

کیا چاہتی ہے ہم سے ہماری یہ زندگی

کیا قرض ہے جو ہم سے ادا ہو نہیں رہا

دھوپ سائے کی طرح پھیل گئی

ان درختوں کی دعا لینے سے

تصویری شاعری 2

 

متعلقہ شعرا

"کراچی" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے