Khalid Sharif's Photo'

خالد شریف

1947 | پاکستان

خالد شریف

غزل 9

نظم 1

 

اشعار 9

بچھڑا کچھ اس ادا سے کہ رت ہی بدل گئی

اک شخص سارے شہر کو ویران کر گیا

خالدؔ میں بات بات پہ کہتا تھا جس کو جان

وہ شخص آخرش مجھے بے جان کر گیا

آسماں جھانک رہا ہے خالدؔ

چاند کمرے میں مرے اترا ہے

آج کچھ رنگ دگر ہے مرے گھر کا خالدؔ

سوچتا ہوں یہ تری یاد ہے یا خود تو ہے

ناکام حسرتوں کے سوا کچھ نہیں رہا

دنیا میں اب دکھوں کے سوا کچھ نہیں رہا

قطعہ 1

 

کتاب 13

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے