Kumar Vishwas's Photo'

کمار وشواس

1970 | دلی, انڈیا

کمار وشواس کے اشعار

2.2K
Favorite

باعتبار

کوئی دیوانہ کہتا ہے کوئی پاگل سمجھتا ہے

مگر دھرتی کی بے چینی کو بس بادل سمجھتا ہے

اسی کی طرح مجھے سارا زمانا چاہے

وہ مرا ہونے سے زیادہ مجھے پانا چاہے

دل کے تمام زخم تری ہاں سے بھر گئے

جتنے کٹھن تھے راستے وہ سب گزر گئے

مرا خیال تری چپیوں کو آتا ہے

ترا خیال مری ہچکیوں کو آتا ہے

جب سے ملا ہے ساتھ مجھے آپ کا حضور

سب خواب زندگی کے ہمارے سنور گئے

جسم چادر سا بچھ گیا ہوگا

روح سلوٹ ہٹا رہی ہوگی

آدمی ہونا خدا ہونے سے بہتر کام ہے

خود ہی خود کے خواب کی تعبیر بن کر دیکھ لے

پھر مری یاد آ رہی ہوگی

پھر وہ دیپک بجھا رہی ہوگی

اپنے ہی آپ سے اس طرح ہوئے ہیں رخصت

سانس کو چھوڑ دیا جس سمت بھی جانا چاہے

چاروں طرف بکھر گئیں سانسوں کی خوشبوئیں

راہ وفا میں آپ جہاں بھی جدھر گئے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

GET YOUR FREE PASS
بولیے