noImage

میر محمدی بیدار

1732 - 1796

غزل 94

اشعار 45

آہ قاصد تو اب تلک نہ پھرا

دل دھڑکتا ہے کیا ہوا ہوگا

ہیں تصور میں اس کے آنکھیں بند

لوگ جانیں ہیں خواب کرتا ہوں

  • شیئر کیجیے

ہم پہ سو ظلم و ستم کیجئے گا

ایک ملنے کو نہ کم کیجئے گا

ای- کتاب 3

دیوان بیدار

 

1935

دیوان بیدار

 

1937

دیوان بیدار

 

1935