Mustafa Shahab's Photo'

مصطفی شہاب

انگلستان

غزل 21

اشعار 21

ذہن میں یاد کے گھر ٹوٹنے لگتے ہیں شہابؔ

لوگ ہو جاتے ہیں جی جی کے پرانے کتنے

  • شیئر کیجیے

ایسا بھی کبھی ہو میں جسے خواب میں دیکھوں

جاگوں تو وہی خواب کی تعبیر بتائے

  • شیئر کیجیے

شاید وہ بھولی بسری نہ ہو آرزو کوئی

کچھ اور بھی کمی سی ہے تیری کمی کے ساتھ

  • شیئر کیجیے

ای- کتاب 4

آندھی سرشام

 

2003

کاغذ کی کشتیاں

 

2012

سفر آمادہ

 

1999

شام ڈھلے سویرا

 

1996