Font by Mehr Nastaliq Web

aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر
Natiq Lakhnavi's Photo'

ناطق لکھنوی

1878 - 1950 | لکھنؤ, انڈیا

ناطق لکھنوی

غزل 25

اشعار 14

کہہ رہا ہے شور دریا سے سمندر کا سکوت

جس کا جتنا ظرف ہے اتنا ہی وہ خاموش ہے

  • شیئر کیجیے

اے شمع تجھ پہ رات یہ بھاری ہے جس طرح

میں نے تمام عمر گزاری ہے اس طرح

مر مر کے اگر شام تو رو رو کے سحر کی

یوں زندگی ہم نے تری دوری میں بسر کی

  • شیئر کیجیے

ابتدا سے آج تک ناطقؔ کی یہ ہے سرگزشت

پہلے چپ تھا پھر ہوا دیوانہ اب بے ہوش ہے

  • شیئر کیجیے

آزادیوں کا حق نہ ادا ہم سے ہو سکا

انجام یہ ہوا کہ گرفتار ہو گئے

  • شیئر کیجیے

کتاب 4

 

تصویری شاعری 2

 

آڈیو 6

آنسوؤں سے خون کے اجزا بدلتے جائیں_گے

اے شمع تجھ پہ رات یہ بھاری ہے جس طرح

خون_دل کا جو کچھ اشکوں سے پتہ ملتا ہے

Recitation

"لکھنؤ" کے مزید شعرا

Recitation

Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

GET YOUR PASS
بولیے