Quaiser Khalid's Photo'

قیصر خالد

1971 | ممبئی, انڈیا

قیصر خالد

غزل 21

اشعار 10

میٹھی باتیں، کبھی تلخ لہجے کے تیر

دل پہ ہر دن ہے ان کا کرم بھی نیا

ڈال دی پیروں میں اس شخص کے زنجیر یہاں

وقت نے جس کو زمانے میں اچھلتے دیکھا

باتوں سے پھول جھڑتے تھے لیکن خبر نہ تھی

اک دن لبوں سے ان کے ہی نشتر بھی آئیں گے

مہمل ہے نہ جانیں تو، سمجھیں تو وضاحت ہے

ہے زیست فقط دھوکا اور موت حقیقت ہے

ہو پائے کسی کے ہم بھی کہاں یوں کوئی ہمارا بھی نہ ہوا

کب ٹھہری کسی اک پر بھی نظر کیا چیز ہے شہر خوباں بھی

کتاب 4

 

"ممبئی" کے مزید شعرا

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

بولیے