سیماب اکبرآبادی

ممتاز ترین قبل از جدید شاعروں میں نمایاں، سیکڑوں شاگردوں کے استاد

Editor Choiceمنتخب Popular Choiceمقبول
غزلصنف
0 ا ,اب کیا بتاؤں میں تیرے ملنے سے کیا ملا0
0 ا ,آنکھ سے ٹپکا جو آنسو وہ ستارا ہو گیا0
0 ا ,بقدر_شوق اقرار_وفا کیا0
0 ا ,تقدیر میں اضافۂ_سوز_وفا ہوا0
0 ا ,جب تک غم_الفت کا عنصر نہ ملا ہوگا0
0 ا ,جو میرے تنگنائے_دل میں تجھ کو جلوہ_گر دیکھا0
0 ا ,زندان_کائنات میں محصور کر دیا0
0 ا ,سکوں_پذیر جنون_شباب ہو نہ سکا0
0 ا ,شکریہ ہستی کا! لیکن تم نے یہ کیا کر دیا0
0 ا ,مرتب ہو کے اک محشر غبار_دل سے نکلے_گا0
0 ج ,عشق خود مائل_حجاب ہے آج0
0 جاگ اور دیکھ ذرا عالم ویراں میرا0
0 جلوہ گاہ دل میں مرتے ہی اندھیرا ہو گیا0
0 ر ,آ کہ ہستی بے_لب_و_بے_گوش ہے تیرے بغیر0
0 ر ,جو سالک ہے تو اپنے نفس کا عرفان پیدا کر0
0 روز فراق ہر طرف اک انتشار تھا0
0 ز ,مجھے فکر_و_سر_وفا ہے ہنوز0
0 م ,ضبط سے نا_آشنا ہم صبر سے بیگانہ ہم0
0 ن ,اجازت دے کہ اپنی داستان_غم بیاں کر لیں0
0 ن ,آؤ پھر گرمی دیار_عشق میں پیدا کریں0
0 ن ,جس جگہ جمع ترے خاک_نشیں ہوتے ہیں0
0 ن ,جو عمر تیری طلب میں گنوائے جاتے ہیں0
0 ن ,حد ہو کوئی تو صبر ترے ہجر پر کریں0
0 ن ,دل کی بساط کیا تھی نگاہ_جمال میں0
0 ن ,شاید جگہ نصیب ہو اس گل کے ہار میں0
0 ن ,عزم_فریاد! انہیں اے دل_ناشاد نہیں0
0 ن ,کھو کر تری گلی میں دل_بے_خبر کو میں0
0 ن ,محفل_عشق میں جب نام ترا لیتے ہیں0
0 ن ,میری رفعت پر جو حیراں ہے تو حیرانی نہیں0
0 ہم ہیں سر تا بہ پا تمنا (ردیف .. ٰ)0
0 و ,رسماً ہی ان کو نالۂ_دل کی خبر تو ہو0
0 ے ,آ اپنے دل میں میری تمنا لیے ہوئے0
0 ے ,اب اے بے_درد کیا اس کے لئے ارشاد ہوتا ہے0
0 ے ,ادراک خود_آشنا نہیں ہے0
0 ی ,افسوس گزر گئی جوانی0
0 ے ,انجام ہر اک شے کا بجز خاک نہیں ہے0
0 ے ,بدن سے روح رخصت ہو رہی ہے0
0 ی ,بڑی دلچسپیوں سے صبح_شام_زندگی ہوگی0
0 ی ,بقید_وقت یہ مژدہ سنا رہا ہے کوئی1
0 ی ,جرس ہے کاروان_اہل_عالم میں فغاں میری0
0 ے ,جہان_رنگ_و_بو میں مستقل تخلیق_مستی ہے0
0 ے ,جو انساں باریاب_پردۂ_اسرار ہو جائے0
0 ے ,چمک جگنو کی برق_بے_اماں معلوم ہوتی ہے0
0 ی ,چھپاتا ہوں مگر چھپتا نہیں درد_نہاں پھر بھی0
0 ے ,حسن کے دل میں جگہ پاتے ہی دیوانہ بنے0
0 ے ,ختم اس طرح نزاع_حق_و_باطل ہو جائے0
0 ے ,خود اٹھ کے ہاتھ میرے گریباں میں آ گئے0
0 ے ,دل تیرے تغافل سے خبردار نہ ہو جائے0
0 ی ,سبو پر جام پر شیشے پہ پیمانے پہ کیا گزری0
0 ے ,شام_فرقت انتہائے_گردش_ایام ہے0
0 ے ,غم مجھے حسرت مجھے وحشت مجھے سودا مجھے0
0 ے ,کمال_علم و تحقیق_مکمل کا یہ حاصل ہے0
0 ی ,ناحق شکایت_غم_دنیا کرے کوئی0
0 ی ,نسیم_صبح گلشن میں گلوں سے کھیلتی ہوگی0
0 ے ,نہ وہ فریاد کا مطلب نہ منشائے_فغاں سمجھے0
0 ے ,ہستی کو مری مستئ_پیمانہ بنا دے0
0 ے ,وسعتیں محدود ہیں ادراک_انساں کے لئے0
0 ے ,وہ جب رنگ_پریشانی کو خلوت_گیر دیکھیں_گے0
0 ے ,یہ دور_ترقی ہے رفعت کا زمانہ ہے0
0 ی ,یہ کس نے شاخ_گل لا کر قریب_آشیاں رکھ دی0
seek-warrow-w
  • 1
arrow-eseek-e1 - 60 of 60 items