Editor Choiceمنتخب Popular Choiceمقبول
غزلصنف
0 ا ,آندھیاں آتی تھیں لیکن کبھی ایسا نہ ہوا0
0 ا ,بھٹک گیا کہ منزلوں کا وہ سراغ پا گیا0
0 ا ,تیرے سوا بھی کوئی مجھے یاد آنے والا تھا0
0 ا ,تیرے وعدے کو کبھی جھوٹ نہیں سمجھوں_گا2
0 ا ,جدا ہوئے وہ لوگ کہ جن کو ساتھ میں آنا تھا2
0 ا ,جہاں میں ہونے کو اے دوست یوں تو سب ہوگا0
0 ا ,جو چاہتی دنیا ہے وہ مجھ سے نہیں ہوگا0
0 ا ,سبھی کو غم ہے سمندر کے خشک ہونے کا0
0 ا ,سیاہ رات نہیں لیتی نام ڈھلنے کا0
0 ا ,شمع_دل شمع_تمنا نہ جلا مان بھی جا0
0 ا ,شہر_جنوں میں کل تلک جو بھی تھا سب بدل گیا0
0 ا ,طلسم ختم چلو آہ_بے_اثر کا ہوا0
0 ا ,کاروبار_شوق میں بس فائدہ اتنا ہوا0
0 ا ,کب سماں دیکھیں_گے ہم زخموں کے بھر جانے کا0
0 ا ,کس کس طرح سے مجھ کو نہ رسوا کیا گیا2
0 ا ,موم کے جسموں والی اس مخلوق کو رسوا مت کرنا0
0 ا ,نظر جو کوئی بھی تجھ سا حسیں نہیں آتا0
0 ا ,ہنس رہا تھا میں بہت گو وقت وہ رونے کا تھا3
0 ا ,یہ جب ہے کہ اک خواب سے رشتہ ہے ہمارا2
0 ا ,یہ کیا ہے محبت میں تو ایسا نہیں ہوتا2
0 ت ,پہلے نہائی اوس میں پھر آنسوؤں میں رات0
0 م ,گرد کو کدورتوں کی دھو نہ پائے ہم0
0 ن ,ان آنکھوں کی مستی کے مستانے ہزاروں ہیں0
0 ن ,ایسے ہجر کے موسم کب کب آتے ہیں2
0 ن ,تجھ سے بچھڑے ہیں تو اب کس سے ملاتی ہے ہمیں0
0 ن ,تیری سانسیں مجھ تک آتے بادل ہو جائیں0
0 ن ,دام_الفت سے چھوٹتی ہی نہیں0
0 ن ,زندگی جب بھی تری بزم میں لاتی ہے ہمیں2
0 ن ,عکس کو قید کہ پرچھائیں کو زنجیر کریں0
0 ن ,کہاں تک وقت کے دریا کو ہم ٹھہرا ہوا دیکھیں2
0 ن ,کھلے جو آنکھ کبھی دیدنی یہ منظر ہیں0
0 و ,بے_تاب ہیں اور عشق کا دعویٰ نہیں ہم کو0
0 و ,تو کہاں ہے تجھ سے اک نسبت تھی میری ذات کو0
0 و ,دل پریشاں ہو مگر آنکھ میں حیرانی نہ ہو0
0 و ,شدید پیاس تھی پھر بھی چھوا نہ پانی کو2
0 و ,عجیب سانحہ مجھ پر گزر گیا یارو2
0 و ,نہیں روک سکو_گے جسم کی ان پروازوں کو0
0 ے ,اس کو کسی کے واسطے بے_تاب دیکھتے0
0 ے ,آسماں کچھ بھی نہیں اب تیرے کرنے کے لیے0
0 ے ,امید سے کم چشم_خریدار میں آئے2
0 ے ,آندھی کی زد میں شمع_تمنا جلائی جائے0
0 ی ,آنکھ کی یہ ایک حسرت تھی کہ بس پوری ہوئی0
0 ے ,آہٹ جو سنائی دی ہے ہجر کی شب کی ہے0
0 ے ,بنیاد_جہاں میں کجی کیوں ہے0
0 ے ,بہتے دریاؤں میں پانی کی کمی دیکھنا ہے0
0 ی ,بھولی_بسری یادوں کی بارات نہیں آئی0
0 ے ,تمام خلق_خدا دیکھ کے یہ حیراں ہے0
0 ے ,جاگتا ہوں میں ایک اکیلا دنیا سوتی ہے2
0 ے ,جب بھی ملتی ہے مجھے اجنبی لگتی کیوں ہے2
0 ے ,جستجو جس کی تھی اس کو تو نہ پایا ہم نے2
0 ی ,جہاں پہ تیری کمی بھی نہ ہو سکے محسوس (ردیف .. ی)0
0 ے ,دل چیز کیا ہے آپ مری جان لیجئے0
0 ے ,دل میں اترے_گی تو پوچھے_گی جنوں کتنا ہے0
0 ے ,دل میں رکھتا ہے نہ پلکوں پہ بٹھاتا ہے مجھے0
0 ی ,دیار_دل نہ رہا بزم_دوستاں نہ رہی0
0 ے ,دیکھ دریا کو کہ طغیانی میں ہے0
0 ے ,زخموں کو رفو کر لیں دل شاد کریں پھر سے0
0 ے ,زمیں سے تا_بہ_فلک دھند کی خدائی ہے0
0 ے ,زندگی جیسی توقع تھی نہیں کچھ کم ہے2
0 ے ,سینے میں جلن آنکھوں میں طوفان سا کیوں ہے2
0 ے ,شکوہ کوئی دریا کی روانی سے نہیں ہے0
0 ے ,فضائے_میکدہ بے_رنگ لگ رہی ہے مجھے0
0 ے ,کس فکر کس خیال میں کھویا ہوا سا ہے2
0 ے ,کہنے کو تو ہر بات کہی تیرے مقابل (ردیف .. ے)0
0 ے ,گزرے تھے حسین ابن_علی رات ادھر سے0
0 ے ,مشعل_درد پھر ایک بار جلا لی جائے0
0 ے ,معبد_زیست میں بت کی مثال جڑے ہوں_گے0
0 ے ,منظر گزشتہ شب کے دامن میں بھر رہا ہے0
0 ی ,نسبت رہے تم سے سدا حضرت نظام_الدین_جی0
0 ی ,نشاط_غم بھی ملا رنج_شاد_مانی بھی2
0 ے ,نکلا ہے چاند شب کی پذیرائی کے لئے0
0 ی ,ہجوم_درد ملا زندگی عذاب ہوئی0
0 ے ,ہر خواب کے مکاں کو مسمار کر دیا ہے0
0 ے ,ہزار بار مٹی اور پائمال ہوئی ہے0
0 ے ,ہم پڑھ رہے تھے خواب کے پرزوں کو جوڑ کے0
0 ے ,ہماری آنکھ میں نقشہ یہ کس مکان کا ہے0
0 ے ,ہوا چلے ورق_آرزو پلٹ جائے0
0 ے ,ہوا کا زور ہی کافی بہانہ ہوتا ہے0
0 ے ,وہ بے_وفا ہے ہمیشہ ہی دل دکھاتا ہے0
0 ے ,یہ اک شجر کہ جس پہ نہ کانٹا نہ پھول ہے0
0 ی ,یہ جگہ اہل_جنوں اب نہیں رہنے والی0
0 ے ,یہ قافلے یادوں کے کہیں کھو گئے ہوتے0
0 ے ,یہ کیا جگہ ہے دوستو یہ کون سا دیار ہے2
0 ے ,یہ کیا ہوا کہ طبیعت سنبھلتی جاتی ہے0
seek-warrow-w
  • 1
arrow-eseek-e1 - 84 of 84 items