Allama Iqbal's Photo'

علامہ اقبال

1877 - 1938 | لاہور, پاکستان

عظیم اردو شاعر اور 'سارے جہاں سے اچھا...' و 'لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری' جیسے شہرہ آفاق ترانے کے خالق

عظیم اردو شاعر اور 'سارے جہاں سے اچھا...' و 'لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری' جیسے شہرہ آفاق ترانے کے خالق

غزل 116

نظم 433

اشعار 120

خودی کو کر بلند اتنا کہ ہر تقدیر سے پہلے

خدا بندے سے خود پوچھے بتا تیری رضا کیا ہے

ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ہیں

ابھی عشق کے امتحاں اور بھی ہیں

اچھا ہے دل کے ساتھ رہے پاسبان عقل

لیکن کبھی کبھی اسے تنہا بھی چھوڑ دے

رباعی 10

قطعہ 3

 

لطیفے 13

ای- کتاب 845

1985 کا اقبالیاتی ادب ایک جائزہ

 

1986

اے وائس فرام دی ایسٹ

دی پوئٹری آف اقبال

1982

آئینۂ اقبال

تضمینات بر کلام اقبال

1973

آئینۂ اقبالیات

جلد-001

1999

آپ بیتی علامہ اقبال

 

2015

ادبی دنیا ،لاہور

اقبال نمبر: شمارہ نمبر-024

 

افکار اقبال

 

2001

افکار اقبال

 

1986

افکار اقبال

 

1977

افکار اقبال

 

2011

تصویری شاعری 19

دنیا کی محفلوں سے اکتا گیا ہوں یا رب کیا لطف انجمن کا جب دل ہی بجھ گیا ہو شورش سے بھاگتا ہوں دل ڈھونڈتا ہے میرا ایسا سکوت جس پر تقریر بھی فدا ہو مرتا ہوں خامشی پر یہ آرزو ہے میری دامن میں کوہ کے اک چھوٹا سا جھونپڑا ہو آزاد فکر سے ہوں عزلت میں دن گزاروں دنیا کے غم کا دل سے کانٹا نکل گیا ہو لذت سرود کی ہو چڑیوں کے چہچہوں میں چشمے کی شورشوں میں باجا سا بج رہا ہو گل کی کلی چٹک کر پیغام دے کسی کا ساغر ذرا سا گویا مجھ کو جہاں_نما ہو ہو ہاتھ کا سرہانا سبزے کا ہو بچھونا شرمائے جس سے جلوت خلوت میں وہ ادا ہو مانوس اس قدر ہو صورت سے میری بلبل ننھے سے دل میں اس کے کھٹکا نہ کچھ مرا ہو صف باندھے دونوں جانب بوٹے ہرے ہرے ہوں ندی کا صاف پانی تصویر لے رہا ہو ہو دل_فریب ایسا کوہسار کا نظارہ پانی بھی موج بن کر اٹھ اٹھ کے دیکھتا ہو آغوش میں زمیں کی سویا ہوا ہو سبزہ پھر پھر کے جھاڑیوں میں پانی چمک رہا ہو پانی کو چھو رہی ہو جھک جھک کے گل کی ٹہنی جیسے حسین کوئی آئینہ دیکھتا ہو مہندی لگائے سورج جب شام کی دلہن کو سرخی لیے سنہری ہر پھول کی قبا ہو راتوں کو چلنے والے رہ جائیں تھک کے جس دم امید ان کی میرا ٹوٹا ہوا دیا ہو بجلی چمک کے ان کو کٹیا مری دکھا دے جب آسماں پہ ہر سو بادل گھرا ہوا ہو پچھلے پہر کی کوئل وہ صبح کی موذن میں اس کا ہم_نوا ہوں وہ میری ہم_نوا ہو کانوں پہ ہو نہ میرے دیر و حرم کا احساں روزن ہی جھونپڑی کا مجھ کو سحر_نما ہو پھولوں کو آئے جس دم شبنم وضو کرانے رونا مرا وضو ہو نالہ مری دعا ہو اس خامشی میں جائیں اتنے بلند نالے تاروں کے قافلے کو میری صدا درا ہو ہر دردمند دل کو رونا مرا رلا دے بے_ہوش جو پڑے ہیں شاید انہیں جگا دے

ویڈیو 105

This video is playing from YouTube

ویڈیو کا زمرہ
دیگر ویڈیو
aarzoo hai ke nazar aai Mera Mah-e-tamam

غلام علی

Allama Iqbal

Allama Iqbal ضیا محی الدین

Allama Iqbal Urdu & Farsi Nazam

نامعلوم

Apna maqaam paida kar

راحت فتح علی

Jawab-e-Khizr

غلام علی

Khudi Ka Sirr-E-Niha by Shafqat Amanat Ali & Sanam Marvi

صنم ماروی

Na aate, hamen isme takrar kya thi

فریدہ خانم

Reading a poetry by Allama Iqbal

Zia Mohiuddin reading a poetry by Allama Iqbal. ضیا محی الدین

shikwa jawab-e-shikwa

ٹینا ثانی

Tu Rah Naward-e-Shauq Hai, Manzil Na Ker Qabool

راحت فتح علی

Tu Reh Nawarday Shauq He" by Rahat Fateh Ali Khan & Sanam Marvi

راحت فتح علی

Yeh gumbad-e-minayi yeh alam-e-tanhai

ملکہ پکھراج

سیزا رائے

محمّد علی

اثر کرے نہ کرے سن تو لے مری فریاد

نامعلوم

اعجاز ہے کسی کا یا گردش_زمانہ

ترنم ناز

افلاک سے آتا ہے نالوں کا جواب آخر

سلمان غنی

انوکھی وضع ہے سارے زمانے سے نرالے ہیں

نامعلوم

اک دانش_نورانی اک دانش_برہانی

نامعلوم

بچے کی دعا

لب پہ آتی ہے دعا بن کے تمنا میری متفرق

پریشاں ہو کے میری خاک آخر دل نہ بن جائے

صنم ماروی

پھر چراغ_لالہ سے روشن ہوئے کوہ و دمن

ناہید اختر

ترانۂ_ہندی

سارے جہاں سے اچھا ہندوستاں ہمارا لتا منگیشکر

ترے عشق کی انتہا چاہتا ہوں

رادھکا چوپڑا

ترے عشق کی انتہا چاہتا ہوں

طاہرہ سید

تصویر_درد

نہیں منت_کش_تاب_شنیدن داستاں میری نامعلوم

تو ابھی رہ_گزر میں ہے قید_مقام سے گزر

جواد احمد

تو اے اسیر_مکاں لا_مکاں سے دور نہیں

عابدہ پروین

جاوید کے نام

دیار_عشق میں اپنا مقام پیدا کر نصرت فتح علی خان

جبریل و ابلیس

جبرئیل ذوالفقار علی بخاری

جواب_شکوہ

دل سے جو بات نکلتی ہے اثر رکھتی ہے نامعلوم

جواب_شکوہ

دل سے جو بات نکلتی ہے اثر رکھتی ہے نصرت فتح علی خان

جواب_شکوہ

دل سے جو بات نکلتی ہے اثر رکھتی ہے عابد علی بیگ

حادثہ وہ جو ابھی پردۂ_افلاک میں ہے

مہدی حسن

خرد کے پاس خبر کے سوا کچھ اور نہیں

وٹھل راؤ

خرد_مندوں سے کیا پوچھوں کہ میری ابتدا کیا ہے

نامعلوم

خودی وہ بحر ہے جس کا کوئی کنارہ نہیں

نامعلوم

خودی وہ بحر ہے جس کا کوئی کنارہ نہیں

غلام علی

خودی کی شوخی و تندی میں کبر_و_ناز نہیں

نعمان شوق

دگرگوں ہے جہاں تاروں کی گردش تیز ہے ساقی

علی رضا

ذوق و شوق

قلب و نظر کی زندگی دشت میں صبح کا سماں ذوالفقار علی بخاری

زمانہ آیا ہے بے_حجابی کا عام دیدار_یار ہوگا

ضیا محی الدین

ستاروں سے آگے جہاں اور بھی ہیں

راحت فتح علی

سیما سہگل

سیما سہگل

شکوہ

کیوں زیاں_کار بنوں سود_فراموش رہوں نصرت فتح علی خان

شکوہ

کیوں زیاں_کار بنوں سود_فراموش رہوں نصرت فتح علی خان

شکوہ

کیوں زیاں_کار بنوں سود_فراموش رہوں نصرت فتح علی خان

شکوہ

کیوں زیاں_کار بنوں سود_فراموش رہوں نصرت فتح علی خان

شکوہ

کیوں زیاں_کار بنوں سود_فراموش رہوں نصرت فتح علی خان

شکوہ

کیوں زیاں_کار بنوں سود_فراموش رہوں نصرت فتح علی خان

شکوہ

کیوں زیاں_کار بنوں سود_فراموش رہوں ضیا محی الدین

شکوہ

کیوں زیاں_کار بنوں سود_فراموش رہوں عابد علی بیگ

طلوع_اسلام

دلیل_صبح_روشن ہے ستاروں کی تنک_تابی غلام علی

عقل گو آستاں سے دور نہیں

نامعلوم

فطرت نے نہ بخشا مجھے اندیشۂ_چالاک

ترنم ناز

فطرت کو خرد کے روبرو کر

نامعلوم

گلزار_ہست_و_بود نہ بیگانہ_وار دیکھ

ناشناس

گیسوئے_تابدار کو اور بھی تابدار کر

فریحہ پرویز

لا پھر اک بار وہی بادہ و جام اے ساقی

ضیا محی الدین

لینن

اے انفس و آفاق میں پیدا تری آیات ذوالفقار علی بخاری

مارچ 1907

زمانہ آیا ہے بے_حجابی کا عام دیدار_یار ہوگا ضیا محی الدین

متاع_بے_بہا ہے درد_و_سوز_آرزو_مندی

نامعلوم

مجنوں نے شہر چھوڑا تو صحرا بھی چھوڑ دے

نامعلوم

مجھے آہ_و_فغان_نیم_شب کا پھر پیام آیا

حامد علی خان

محبت

عروس_شب کی زلفیں تھیں ابھی ناآشنا خم سے ضیا محی الدین

مرزا غالبؔ

فکر_انساں پر تری ہستی سے یہ روشن ہوا نصیرا لد ین شاہ

مسلماں کے لہو میں ہے سلیقہ دل_نوازی کا

نامعلوم

مٹا دیا مرے ساقی نے عالم_من_و_تو

نامعلوم

میری نوائے_شوق سے شور حریم_ذات میں

محمّد علی

نگاہ_فقر میں شان_سکندری کیا ہے

شوکت علی

نہ آتے ہمیں اس میں تکرار کیا تھی

فریدہ خانم

نہ تخت_و_تاج میں نے لشکر_و_سپاہ میں ہے

نامعلوم

نہ تو زمیں کے لیے ہے نہ آسماں کے لیے

مسعود رانا

نیا شوالہ

سچ کہہ دوں اے برہمن گر تو برا نہ مانے عبد الاحد ساز

والدہ مرحومہ کی یاد میں

ذرہ ذرہ دہر کا زندانی_تقدیر ہے ذوالفقار علی بخاری

وہ حرف_راز کہ مجھ کو سکھا گیا ہے جنوں

مہدی حسن

وہی میری کم_نصیبی وہی تیری بے_نیازی

نیرہ نور

کبھی اے حقیقت_منتظر نظر آ لباس_مجاز میں

غلام علی

کبھی اے حقیقت_منتظر نظر آ لباس_مجاز میں

نصرت فتح علی خان

کبھی اے حقیقت_منتظر نظر آ لباس_مجاز میں

نامعلوم

کشادہ دست_کرم جب وہ بے_نیاز کرے

نامعلوم

ہر چیز ہے محو_خودنمائی

اقبال بانو

ہر شے مسافر ہر چیز راہی

ثمینہ زاھد

ہزار خوف ہو لیکن زباں ہو دل کی رفیق

نامعلوم

ہندوستانی بچوں کا قومی گیت

چشتی نے جس زمیں میں پیغام_حق سنایا نامعلوم

یہ پیام دے گئی ہے مجھے باد_صبح_گاہی

شفقت امانت علی

پریشاں ہو کے میری خاک آخر دل نہ بن جائے

مہدی حسن

ترانۂ_ہندی

سارے جہاں سے اچھا ہندوستاں ہمارا متفرق

جب عشق سکھاتا ہے آداب_خود_آگاہی

حنا نصراللہ

آڈیو 59

اپنی جولاں_گاہ زیر_آسماں سمجھا تھا میں

اگر کج_رو ہیں انجم آسماں تیرا ہے یا میرا

پریشاں ہو کے میری خاک آخر دل نہ بن جائے

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

شعرا متعلقہ

  • جوشؔ ملسیانی جوشؔ ملسیانی ہم عصر
  • چکبست برج نرائن چکبست برج نرائن ہم عصر
  • عزیز لکھنوی عزیز لکھنوی ہم عصر
  • شاد عظیم آبادی شاد عظیم آبادی ہم عصر
  • ثاقب لکھنوی ثاقب لکھنوی ہم عصر
  • جاوید اقبال جاوید اقبال بیٹا
  • میرزا الطاف حسین عالم لکھنوی میرزا الطاف حسین عالم لکھنوی ہم عصر
  • مضطر خیرآبادی مضطر خیرآبادی ہم عصر
  • داغؔ دہلوی داغؔ دہلوی استاد
  • آرزو لکھنوی آرزو لکھنوی ہم عصر

شعرا کے مزید "لاہور"

  • فیض احمد فیض فیض احمد فیض
  • شہزاد احمد شہزاد احمد
  • حفیظ جالندھری حفیظ جالندھری
  • اختر شیرانی اختر شیرانی
  • قتیل شفائی قتیل شفائی
  • ناصر کاظمی ناصر کاظمی
  • منیر نیازی منیر نیازی
  • محمد حسین آزاد محمد حسین آزاد
  • حبیب جالب حبیب جالب
  • ظفر اقبال ظفر اقبال

Added to your favorites

Removed from your favorites