احسان زندگی پہ کئے جا رہے ہیں ہم

من تو نہیں ہے پھر بھی جیے جا رہے ہیں ہم

ہم کو اکثر یہ خیال آتا ہے اس کو دیکھ کر

یہ ستارہ کیسے غلطی سے زمیں پر رہ گیا