Editor Choiceمنتخب Popular Choiceمقبول
غزلصنف
0 ا ,اپنے انداز کا اکیلا تھا0
0 ا ,اپنے ہر ہر لفظ کا خود آئینہ ہو جاؤں_گا2
0 ا ,آتے آتے مرا نام سا رہ گیا0
0 ا ,اس نے میری راہ نہ دیکھی اور وہ رشتہ توڑ لیا0
0 ا ,تحریر سے ورنہ مری کیا ہو نہیں سکتا2
0 ا ,تمہیں غموں کا سمجھنا اگر نہ آئے_گا0
0 ا ,دکھ اپنا اگر ہم کو بتانا نہیں آتا0
0 ا ,سبھی کا دھوپ سے بچنے کو سر نہیں ہوتا2
0 ا ,صرف تیرا نام لے کر رہ گیا0
0 ا ,کیا دکھ ہے سمندر کو بتا بھی نہیں سکتا2
0 ا ,لہو نہ ہو تو قلم ترجماں نہیں ہوتا2
0 ا ,مری وفاؤں کا نشہ اتارنے والا0
0 ا ,میرا کیا تھا میں ٹوٹا کہ بکھرا رہا0
0 ا ,میں اپنے خواب سے بچھڑا نظر نہیں آتا0
0 ا ,میں اس امید پہ ڈوبا کہ تو بچا لے_گا0
0 ا ,میں آسماں پہ بہت دیر رہ نہیں سکتا2
0 ا ,میں یہ نہیں کہتا کہ مرا سر نہ ملے_گا2
0 ا ,نہیں کہ اپنا زمانہ بھی تو نہیں آیا0
0 ا ,وہ میرے بالوں میں یوں انگلیاں پھراتا تھا0
0 ا ,وہ میرے گھر نہیں آتا میں اس کے گھر نہیں جاتا0
0 اسے سمجھنے کا کوئی تو راستہ نکلے0
0 بھلا غموں سے کہاں ہار جانے والے تھے0
0 تمام عمر بڑے سخت امتحان میں تھا0
0 تمہاری راہ میں مٹی کے گھر نہیں آتے0
0 چلو ہم ہی پہل کر دیں کہ ہم سے بد گماں کیوں ہو0
0 حادثوں کی زد پہ ہیں تو مسکرانا چھوڑ دیں0
0 حویلیوں میں مری تربیت نہیں ہوتی0
0 خوشی کا ساتھ ملا بھی تو دل پہ بار رہا0
0 دعا کرو کہ کوئی پیاس نذر جام نہ ہو0
0 زندگی تجھ پہ اب الزام کوئی کیا رکھے0
0 سفر پہ آج وہی کشتیاں نکلتی ہیں0
0 کہاں ثواب کہاں کیا عذاب ہوتا ہے0
0 کیا بتاؤں کیسا خود کو در بدر میں نے کیا0
0 مٹے وہ دل جو ترے غم کو لے کے چل نہ سکے0
0 مجھے بجھا دے مرا دور مختصر کر دے0
0 ملی ہواؤں میں اڑنے کی وہ سزا یارو0
0 ن ,شام تک صبح کی نظروں سے اتر جاتے ہیں0
0 ن ,کھل کے ملنے کا سلیقہ آپ کو آتا نہیں0
0 نہ جانے کیوں مجھے اس سے ہی خوف لگتا ہے0
0 ھ ,سب نے ملائے ہاتھ یہاں تیرگی کے ساتھ2
0 ہم اپنے آپ کو اک مسئلہ بنا نہ سکے0
0 و ,تجھ کو سوچا تو پتا ہو گیا رسوائی کو0
0 و ,کچھ اتنا خوف کا مارا ہوا بھی پیار نہ ہو2
0 ے ,اپنے چہرے سے جو ظاہر ہے چھپائیں کیسے0
0 ے ,اپنے سائے کو اتنا سمجھانے دے0
0 ے ,اداسیوں میں بھی رستے نکال لیتا ہے2
0 ے ,اندھیرا ذہن کا سمت_سفر جب کھونے لگتا ہے0
0 ے ,جہاں دریا کہیں اپنے کنارے چھوڑ دیتا ہے2
0 ے ,چاند کا خواب اجالوں کی نظر لگتا ہے2
0 ے ,دور سے ہی بس دریا دریا لگتا ہے0
0 ے ,ذرا سا قطرہ کہیں آج اگر ابھرتا ہے2
0 ے ,رنگ بے_رنگ ہوں خوشبو کا بھروسہ جائے2
0 ی ,کتنا دشوار تھا دنیا یہ ہنر آنا بھی0
0 ے ,کہاں قطرہ کی غم_خواری کرے ہے0
0 ے ,مجھے تو قطرہ ہی ہونا بہت ستاتا ہے2
0 ے ,محبت نا_سمجھ ہوتی ہے سمجھانا ضروری ہے2
0 ے ,میرے غم کو جو اپنا بتاتے رہے2
0 ے ,ہمارا عزم_سفر کب کدھر کا ہو جائے2
0 ے ,وہ مجھ کو کیا بتانا چاہتا ہے2
0 ے ,یہ ہے تو سب کے لیے ہو یہ ضد ہماری ہے2
0 یہی بزم عیش ہوگی یہی دور جام ہوگا0
seek-warrow-w
  • 1
arrow-eseek-e1 - 61 of 61 items