Wajid Ali Shah Akhtar's Photo'

واجد علی شاہ اختر

1823 - 1887 | لکھنؤ, ہندوستان

اودھ کے آخری نواب۔ ہندوستانی موسیقی، رقص اور تھیٹر کے سرپرست

اودھ کے آخری نواب۔ ہندوستانی موسیقی، رقص اور تھیٹر کے سرپرست

غزل 24

اشعار 12

در و دیوار پہ حسرت سے نظر کرتے ہیں

خوش رہو اہل وطن ہم تو سفر کرتے ہیں

  • شیئر کیجیے

الفت نے تری ہم کو تو رکھا نہ کہیں کا

دریا کا نہ جنگل کا سما کا نہ زمیں کا

بے مروت ہو بے وفا ہو تم

اپنے مطلب کے آشنا ہو تم

یہی تشویش شب و روز ہے بنگالے میں

لکھنؤ پھر کبھی دکھلائے مقدر میرا

  • شیئر کیجیے

کمر دھوکا دہن عقدہ غزال آنکھیں پری چہرہ

شکم ہیرا بدن خوشبو جبیں دریا زباں عیسیٰ

  • شیئر کیجیے

کتاب 26

آخری تاجدار اودھ

 

1945

اودھ انڈر واجد علی شاہ

 

1968

بحر الفت

 

 

بنی

 

1987

دفتر حسرت

دیوان انجم

1903

دفتر حسرت

ددیوان انجم

1905

انتخاب واجد علی شاہ اختر

 

1984

ارشاد خاقانی

 

1852

کلیات واجد علی شاہ

 

 

لکھنؤ کا شاہی اسٹیج

 

1957

آڈیو 5

الفت نے تری ہم کو تو رکھا نہ کہیں کا

سنا ہے کوچ تو ان کا پر اس کو کیا کہیے

غنچۂ_دل کھلے جو چاہو تم

Recitation

aah ko chahiye ek umr asar hote tak SHAMSUR RAHMAN FARUQI

متعلقہ شعرا

  • مرزا دبیر مرزا دبیر ہم عصر
  • بہادر شاہ ظفر بہادر شاہ ظفر ہم عصر
  • میر انیس میر انیس ہم عصر

"لکھنؤ" کے مزید شعرا

  • مصحفی غلام ہمدانی مصحفی غلام ہمدانی
  • جرأت قلندر بخش جرأت قلندر بخش
  • میر حسن میر حسن
  • حیدر علی آتش حیدر علی آتش
  • امداد علی بحر امداد علی بحر
  • عرفان صدیقی عرفان صدیقی
  • ارشد علی خان قلق ارشد علی خان قلق
  • ولی اللہ محب ولی اللہ محب
  • خواجہ محمد وزیر خواجہ محمد وزیر
  • اسرار الحق مجاز اسرار الحق مجاز