دل پر شاعری

دل شاعری کے اس انتخاب کو پڑھتے ہوئے آپ اپنے دل کی حالتوں ، کیفیتوں اور صورتوں سے گزریں گے اورحیران ہوں گے کہ کس طرح کسی دوسرے ،تیسرے آدمی کا یہ بیان دراصل آپ کے اپنے دل کی حالت کا بیان ہے ۔ اس بیان میں دل کی آرزوئیں ہیں ، امنگیں ہیں ، حوصلے ہیں ، دل کی گہرائیوں میں جم جانے والی اداسیاں ہیں ، محرومیاں ہیں ، دل کی تباہ حالی ہے ، وصل کی آس ہے ، ہجر کا دکھ ہے ۔

اندھیری رات کو میں روز عشق سمجھا تھا

چراغ تو نے جلایا تو دل بجھا میرا

عبدالرحمان احسان دہلوی
  • شیئر کیجیے

آئینہ چھوڑ کے دیکھا کئے صورت میری

دل مضطر نے مرے ان کو سنورنے نہ دیا

عزیز لکھنوی
  • شیئر کیجیے

آبادی بھی دیکھی ہے ویرانے بھی دیکھے ہیں

جو اجڑے اور پھر نہ بسے دل وہ نرالی بستی ہے

فانی بدایونی

آدمی آدمی سے ملتا ہے

دل مگر کم کسی سے ملتا ہے

People meet each other, fairly frequently

But, meeting of hearts, seldom does one see

People meet each other, fairly frequently

But, meeting of hearts, seldom does one see

جگر مراد آبادی

آغاز محبت کا انجام بس اتنا ہے

جب دل میں تمنا تھی اب دل ہی تمنا ہے

جگر مراد آبادی
  • شیئر کیجیے

آج تک دل کی آرزو ہے وہی

پھول مرجھا گیا ہے بو ہے وہی

جلالؔ مانکپوری

آنے والی ہے کیا بلا سر پر

آج پھر دل میں درد ہے کم کم

جوشؔ ملسیانی
  • شیئر کیجیے

آپ دولت کے ترازو میں دلوں کو تولیں

ہم محبت سے محبت کا صلہ دیتے ہیں

ساحر لدھیانوی

''آپ کی یاد آتی رہی رات بھر''

چاندنی دل دکھاتی رہی رات بھر

فیض احمد فیض

آپ پہلو میں جو بیٹھیں تو سنبھل کر بیٹھیں

دل بیتاب کو عادت ہے مچل جانے کی

when you come into my arms you should be aware

my restless heart is wont to leap, it may give you a scare

when you come into my arms you should be aware

my restless heart is wont to leap, it may give you a scare

جلیلؔ مانک پوری

آرزو تیری برقرار رہے

دل کا کیا ہے رہا رہا نہ رہا

حسرتؔ موہانی

آرزو وصل کی رکھتی ہے پریشاں کیا کیا

کیا بتاؤں کہ میرے دل میں ہے ارماں کیا کیا

اختر شیرانی

اب دلوں میں کوئی گنجائش نہیں ملتی حیاتؔ

بس کتابوں میں لکھا حرف وفا رہ جائے گا

حیات لکھنوی

ابھی راہ میں کئی موڑ ہیں کوئی آئے گا کوئی جائے گا

تمہیں جس نے دل سے بھلا دیا اسے بھولنے کی دعا کرو

بشیر بدر

اچھی صورت نظر آتے ہی مچل جاتا ہے

کسی آفت میں نہ ڈالے دل ناشاد مجھے

جلیلؔ مانک پوری
  • شیئر کیجیے

ادا سے دیکھ لو جاتا رہے گلہ دل کا

بس اک نگاہ پہ ٹھہرا ہے فیصلہ دل کا

ارشد علی خان قلق
  • شیئر کیجیے

اے جنوں پھر مرے سر پر وہی شامت آئی

پھر پھنسا زلفوں میں دل پھر وہی آفت آئی

آسی غازی پوری

انہونی کچھ ضرور ہوئی دل کے ساتھ آج

نادان تھا مگر یہ دوانا کبھی نہ تھا

بلقیس ظفیر الحسن
  • شیئر کیجیے

عقل کہتی ہے دوبارہ آزمانا جہل ہے

دل یہ کہتا ہے فریب دوست کھاتے جائیے

ماہر القادری

عقل و دل اپنی اپنی کہیں جب خمارؔ

عقل کی سنیے دل کا کہا کیجئے

خمارؔ بارہ بنکوی

اور کیا دیکھنے کو باقی ہے

آپ سے دل لگا کے دیکھ لیا

what else is there now for me to view

I have experienced being in love with you

what else is there now for me to view

I have experienced being in love with you

فیض احمد فیض

اور ذکر کیا کیجے اپنے دل کی حالت کا

کچھ بگڑتی رہتی ہے کچھ سنبھلتی رہتی ہے

اعجاز صدیقی

بڑا شور سنتے تھے پہلو میں دل کا

جو چیرا تو اک قطرۂ خوں نہ نکلا

حیدر علی آتش

بدلتی جا رہی ہے دل کی دنیا

نئے دستور ہوتے جا رہے ہیں

شکیل بدایونی

بہتر تو ہے یہی کہ نہ دنیا سے دل لگے

پر کیا کریں جو کام نہ بے دل لگی چلے

شیخ ابراہیم ذوقؔ

بے خودی میں لے لیا بوسہ خطا کیجے معاف

یہ دل بیتاب کی ساری خطا تھی میں نہ تھا

بہادر شاہ ظفر
  • شیئر کیجیے

بھرا ہے شیشۂ دل کو نئی محبت سے

خدا کا گھر تھا جہاں واں شراب خانہ ہوا

حیدر علی آتش

بھول شاید بہت بڑی کر لی

دل نے دنیا سے دوستی کر لی

بشیر بدر
  • شیئر کیجیے

بیمار غم کی چارہ گری کچھ ضرور ہے

وہ درد دل میں دے کہ مسیحا کہیں جسے

آسی غازی پوری

بت خانہ توڑ ڈالئے مسجد کو ڈھائیے

دل کو نہ توڑیئے یہ خدا کا مقام ہے

you may excavate the temple, the mosque you may explode

do not break the heart of man, for this is God's abode

you may excavate the temple, the mosque you may explode

do not break the heart of man, for this is God's abode

حیدر علی آتش

چمک رہا ہے خیمۂ روشن دور ستارے سا

دل کی کشتی تیر رہی ہے کھلے سمندر میں

زیب غوری

چرچا ہمارا عشق نے کیوں جا بہ جا کیا

دل اس کو دے دیا تو بھلا کیا برا کیا

حکیم محمد اجمل خاں شیدا

چہرے پہ سارے شہر کے گرد ملال ہے

جو دل کا حال ہے وہی دلی کا حال ہے

ملک زادہ منظور احمد

چھپ کے رہنا ہے جو سب سے تو یہ مشکل کیا ہے

تم مرے دل میں رہو دل کی تمنا ہو کر

جلیلؔ مانک پوری

چرا کے مٹھی میں دل کو چھپائے بیٹھے ہیں

بہانا یہ ہے کہ مہندی لگائے بیٹھے ہیں

my stolen heart in your palm you hide

with the excuse its henna you've applied

my stolen heart in your palm you hide

with the excuse its henna you've applied

قیصر حیدری دہلوی

دم بہ دم اٹھتی ہیں کس یاد کی لہریں دل میں

درد رہ رہ کے یہ کروٹ سی بدلتا کیا ہے

جمال پانی پتی

ڈر گیا ہے جی کچھ ایسا ہجر سے

تم جو پہلو سے اٹھے دل ہل گیا

جلیلؔ مانک پوری
  • شیئر کیجیے

درد ہو دل میں تو دوا کیجے

اور جو دل ہی نہ ہو تو کیا کیجے

منظر لکھنوی

درد و غم دل کی طبیعت بن گئے

اب یہاں آرام ہی آرام ہے

the heart is accustomed to sorrow and pain

in lasting comfort now I can remain

the heart is accustomed to sorrow and pain

in lasting comfort now I can remain

جگر مراد آبادی

درد دل کتنا پسند آیا اسے

میں نے جب کی آہ اس نے واہ کی

آسی غازی پوری

درد دل کیا بیاں کروں رشکیؔ

اس کو کب اعتبار آتا ہے

محمد علی خاں رشکی
  • شیئر کیجیے

درد دل پہلے تو وہ سنتے نہ تھے

اب یہ کہتے ہیں ذرا آواز سے

جلیلؔ مانک پوری

درد دل سے اٹھا نہیں جاتا

جب سے وہ ہاتھ رکھ گئے دل پر

جلیلؔ مانک پوری
  • شیئر کیجیے

ڈرتا ہوں دیکھ کر دل بے آرزو کو میں

سنسان گھر یہ کیوں نہ ہو مہمان تو گیا

I'm fearful when I see this heart so hopeless and forlorn

why shouldn't this home be desolate, as the guest has gone

I'm fearful when I see this heart so hopeless and forlorn

why shouldn't this home be desolate, as the guest has gone

داغؔ دہلوی

دشت وفا میں جل کے نہ رہ جائیں اپنے دل

وہ دھوپ ہے کہ رنگ ہیں کالے پڑے ہوئے

ہوش ترمذی

دے کے دل ہاتھ ترے اپنے ہاتھ

ہاتھ پر ہاتھ دھرے بیٹھے ہیں

شیخ ظہور الدین حاتم

دیکھ دل کو مرے او کافر بے پیر نہ توڑ

گھر ہے اللہ کا یہ اس کی تو تعمیر نہ توڑ

بہادر شاہ ظفر

دیکھ لیتے جو مرے دل کی پریشانی کو

آپ بیٹھے ہوئے زلفیں نہ سنوارا کرتے

جلیلؔ مانک پوری
  • شیئر کیجیے

دیکھو دنیا ہے دل ہے

اپنی اپنی منزل ہے

محبوب خزاں
  • شیئر کیجیے

دھیان میں اس کے فنا ہو کر کوئی منہ دیکھ لے

دل وہ آئینہ نہیں جو ہر کوئی منہ دیکھ لے

جوشش عظیم آبادی
  • شیئر کیجیے

Favorite added successfully

Favorite removed successfully